اسلام ٹائمز 27 Oct 2018 گھنٹہ 21:40 https://www.islamtimes.org/ur/news/758120/یمن-ایشو-پر-ثالثی-کا-معاملہ-ایران-نے-پاکستان-کو-گرین-سگنل-دیدیا -------------------------------------------------- ٹائٹل : یمن ایشو پر ثالثی کا معاملہ، ایران نے پاکستان کو گرین سگنل دیدیا -------------------------------------------------- ذرائع کیمطابق ایرانی صدر کا کہنا تھا کہ ہم خطے میں امن چاہتے ہیں اور ایران ہمیشہ سے دفاعی پوزیشن میں رہا ہے۔ اس ملاقات کے پیش نظر وزیراعظم عمران خان نے دورہ سعودی عرب کے بعد قوم سے خطاب کرتے ہوئے یہ واضح طور پر کہا کہ پاکستان یمن کے معاملے پر ثالث کا کردار ادا کریگا۔ متن : اسلام ٹائمز۔ انتہائی معتبر ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے قوم سے خطاب کرتے ہوئے یمن کے مسلئے پر جس ثالثی کے کردار کا ذکر کیا، وہ محض ایک بیان نہیں بلکہ اس کا مکمل پس منظر ہے۔ پاکستان نے ثالثی کا کردار ادا کرنے کیلئے باقاعدہ ہوم ورک کر رکھا ہے، اس سے قبل پاکستان کی جانب سے ایران کیساتھ بیک دوڑ ڈپلومیسی شروع کی گئی ہے، جس کیلئے پاکستانی سرکاری وفد نے تہران کا دورہ کیا اور ایرانی صدر حسن روحانی سے ملاقات کے دوران ان سے درخواست کی کہ عالمی صورتحال اس امر کی متقاضی ہے کہ امت مسلمہ اکٹھی ہو اور اجتماعی فیصلے کرے، جبکہ موجودہ صورتحال میں ہم آپس میں لڑ کر اپنی توانائیاں ضائع کر رہے ہیں، جس سے صیہونی طاقتیں فائدہ اٹھا رہی ہیں۔ پاکستانی وفد نے کہا کہ ہمیں اپنے اختلافات کو پس پشت رکھتے ہوئے ایک پلیٹ فارم پر اکٹھے ہو کر تمام مسائل حل کرنے چاہیں۔ ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ پاکستان کی بیک ڈور ڈپلومیسی کیلئے ارکان کی باتیں سن کر ایرانی صدر حسن روحانی متاثر ہو کر آبدیدہ ہوگئے اور انہوں نے امت مسلمہ کو ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا کرنے کی تجویز سے اصولی طور پر اتفاق کیا۔ ذرائع کے مطابق ایرانی صدر کا کہنا تھا کہ ہم خطے میں امن چاہتے ہیں اور ایران ہمیشہ سے دفاعی پوزیشن میں رہا ہے۔ اس ملاقات کے پیش نظر وزیراعظم عمران خان نے دورہ سعودی عرب کے بعد قوم سے خطاب کرتے ہوئے یہ واضح طور پر کہا کہ پاکستان یمن کے معاملے پر ثالث کا کردار ادا کریگا۔ بعض ناقدین یہ کہ رہے تھے کہ پاکستان کس طرح ثالث کا کردار ادا کریگا، جبکہ ناقدین اس صورتحال سے بے خبر ہیں کہ پاکستان نے اس کیلئے باقاعدہ ہوم ورک کر رکھا ہے۔ ایران، سعودی عرب اور یمن کے مختلف دھڑوں کو مذاکرات پر لانے کیلئے باقاعدہ کوششیں شروع ہوگئی ہیں، آئندہ دنوں اور ہفتوں میں وزیراعظم عمران خان یا وزیر خارجہ مزید اقدامات کا اعلان کرینگے۔