0
Monday 7 Apr 2014 08:57
معرفت خط امام خمینی (رہ) سیمینار

آئمہ کفر کے مقابلے میں مبارزہ تاقیامت جاری رہیگا، علامہ ناصر عباس جعفری

امام خمینی (رہ) کا نعرہ ’’امریکا کی نابودی تک جنگ رہیگی‘‘ کبھی نہیں بھولیں گے
آئمہ کفر کے مقابلے میں مبارزہ تاقیامت جاری رہیگا، علامہ ناصر عباس جعفری

اسلام ٹائمز۔ مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ ناصر عباس جعفری نے کہا ہے کہ مبارزہ کی کامیابی یا ناکامی کا دارومدار اس قیام کا راہِ خدا یا راہِ شیطان میں ہونا ہے، ہمارا قیام فقط الٰہی اصولوں کے تحت رضائے الٰہی کے حصول کیلئے ہے، آئمہ کفر کے مقابلے میں مبارزہ تاقیامت جاری رہیگا، ہمیں پاکستان میں عالمی استعماری و استکباری طاقتوں کی بغل بچہ حاکم سیاسی جماعتوں کا بھی مقابلہ کرنا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایم ڈبلیو ایم کراچی ڈویژن (شعبہ تربیت) کے تحت مسجد و امام بارگاہ مدینۃ العلم، گلشن اقبال میں منعقدہ ’’معرفت خط امام خمینی (رہ) سیمینار‘‘ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ سیمینار سے ایم ڈبلیو ایم سندھ کے سیکریٹری جنرل علامہ مختار احمد امامی نے بھی خطاب کیا۔ اس موقع پر مجلس وحدت کے کارکنان اور ذمہ داران نے بھی بڑی تعداد میں شرکت کی۔ اپنے خطاب میں علامہ ناصر عباس جعفری کا کہنا تھا کہ صرف مبارزہ یا قیام کرنا ہی کامیابی نہیں بلکہ کامیابی و ناکامی کا دارومدار اس قیام یا مبارزہ کا راہِ خدا یا راہِ شیطان میں ہونا ہے، دنیا پرست بھی قربانیاں دیتے ہیں، مشکلات اٹھاتے ہیں مگر انکا راستہ شیطان اور ہوا و ہوس پر مبنی ہوتا ہے اور وہ درحقیقت ناکام ہوتے ہیں جبکہ خالص راہ خدا میں قیام یا مبارزہ کرتے ہوئے قربانیاں و مشکلات اٹھانے والے کامیاب ہوتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمارے قیام، ہماری تمام تر فعالیت کا مقصد فقط اور فقط الٰہی اصول و ضوابط کے تحت رضائے الٰہی کا حصول ہونا چاہئیے، ہمارا قیام خدا کیلئے ہونا چاہئیے جو کہ حقیقی معنوں میں کامیابی ہے۔ علامہ ناصر عباس جعفری کا کہنا تھا کہ ہمارے حکمران، سیاسی جماعتیں قیام کرتی ہیں مگر انکا قیام دنیا پرستی کیلئے ہوتا ہے جبکہ راہ خدا میں مبارزہ کرنے والوں کے اہداف و طریقہ کار ان دنیا پرستوں سے یکسر مختلف ہوتے ہیں۔

علامہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ جب سے انسان نے اس دنیا میں قدم رکھا ہے حق و باطل کے درمیان مبارزہ جاری و ساری ہے، جو کہ تاوقت آخر جاری رہے گا، ہماری ذمہ داری مظلوم کی حمایت کرنا اور ظالم سے نبرد آزما ہونا ہے، ہمیں نتیجہ کی فکر کئے بغیر اپنا وظیفہ کو ادا کرنا ہے، ہماری ذمہ داری اپنے کردار کی ادائیگی ہے، امریکا کو، عالمی استعمار کو شکست ہو یا نہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس شرط پر قیام نہیں کر رہے کہ غالب آنا ہے، نہیں بلکہ ہمیں اپنا وظیفہ انجام دینا ہے چاہے غالب آئیں یا نہیں، ہمارا مبارزہ، ہمارا قیام استعمار کے خلاف ہے، وہ استعمار و استکبار جس نے مستعضفین و محرومین کے حقوق کو غضب کر رکھا ہے۔ مرکزی سیکریٹری جنرل ایم ڈبلیو ایم کا مزید کہنا تھا کہ امام خمینی (رہ) نے ہمارے مبارزہ کو ایک جہت عطا کی ہے اور یہ بتا دیا ہے کہ اس دنیا میں عالمی استعمار و استکبار کا سرپرست امریکا سب سے بڑا شیطان ہے، اب ہماری ذمہ داری ہے کہ ہمیں اس مبارزہ کو جاری و ساری رکھنا ہے، آج شیطان بزرگ امریکا عالمی استعمار و استکبار کا امام و پیشوا ہے، آئمہ کفر کے مقابلے میں مبارزہ تاقیامت جاری رہے گا، ان کے ساتھ دوستی نہیں صرف مبارزہ ہو سکتا ہے، لہٰذا ان کے خلاف اٹھ کھڑا ہونا چاہئیے۔ علامہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ ہمیں امام خمینی (رہ) کا یہ نعرہ یاد ہے کہ امریکا کی نابودی تک جنگ رہیگی جنگ رہیگی، ہم اس نعرے نہ تو بھولے ہیں اور نہ ہی کبھی بھولیں گے، لہٰذا ہمارا عالمی استعمار کے ساتھ ٹکراؤ اس کے خاتمہ تک ختم نہیں ہوگا۔

مرکزی سیکریٹری جنرل ایم ڈبلیو ایم نے کہا کہ تھر پارکر میں لوگ بھوک سے مر رہے ہیں اور موئن جو دڑو میں اربوں روپے رقص و سرور کی محافل میں اڑا دئیے جاتے ہیں، یہی استعماریت و استکباریت ہے، پاکستان میں حاکم سیاسی جماعتیں عالمی استعماری و استکباری طاقتوں کی بغل بچہ ہیں، ہمیں پاکستان میں بھی انکا مقابلہ کرنا ہے۔ علامہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ اگر ہم شیطان بزرگ امریکا کا سَر کچلنے میں کامیاب ہوگئے تو جسم کے باقی حصے خود ہی بے جان ہو جائیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں اٹھ کھڑا ہونا ہوگا، اپنی ہستیوں کو ختم کرنا ہوگا، موت، اسیری، عزت و ناموس کے قربان ہونے کے خوف کو ختم کرنا ہوگا،ہمیں لوگوں کو ناامیدی سے نکالنا ہوگا، مگر یاد رکھنا چاہئیے کہ اس راہ میں آرام نہیں مشکلات ہیں، راستے کٹھن ہیں، اسیری و جلا وطنی ہے۔

مجلس وحدت مسلمین سندھ کے سیکرٹری جنرل علامہ مختار احمد امامی نے شرکائے سیمینار سے اپنے خطاب میں کہا کہ حضرت امام خمینی (رہ) وہ عظیم ہستی کہ جنہوں نے پروردگار عالم سے جو عہد و پیمان باندھا تھا اور اس کی راہ میں جو عظیم جدوجہد کی وہ ہمارے لئے مشعل راہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ حضرت امام خمینی (رہ) کی راہ خدا میں جدوجہد ہمارے لئے واضح مثال ہے کہ استعمار و استکبار چاہئیے جتنا بڑا ہی کیوں نہ ہو، خواہ وہ کتنا ہی خدائی کا دعویٰ کرے مگر وہ حق کے سامنے نہیں ٹہر سکتا، اسے فنا ہونا ہی ہوتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں آج بھی عالمی استعمار و استکبار اور اسکے سرپرست شیطان بزرگ امریکا اور اسکے مقامی نمک خوار ایجنٹوں کے مقابلے میں مبارزہ کی راہ میں حضرت امام خمینی (رہ) کے عظیم خط کی معرفت اور حقیقی معنوں میں پیروی و گامزن ہونے کی ضرورت ہے کہ جس کے بغیر عالمی استعمار کے ساتھ مبارزہ ممکن نہیں۔ علامہ مختار امامی کا کہنا تھا کہ اسلامی ناب محمدی میں شکست نام کی کوئی چیز نہیں ہے تو یہ کیسے ممکن ہے کہ لبنان میں چند ہزار حزب اللہ کے جوان خطِ ولایت فقیہ و ولی فقیہ زمان رہبر معظم آیت اللہ العظمیٰ سید علی خامنہ ای کی پیروی کرتے ہوئے پورے خطے میں ہر ہر محاذ پر عالمی استعمار امریکا و اسرائیل کو شکست سے مسلسل دوچار کرتے چلے آئیں مگر ہم ناکام ہو جائیں، نہیں ایسا ہرگز نہیں ہوسکتا بشرط یہ کہ ہم پانچ کروڑ شیعہ پاکستان میں خطِ ولایت و ولی فقیہ پر اخلاص کے ساتھ گامزن ہو جائیں۔

خبر کا کوڈ : 369940
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش