0
Friday 8 Jun 2018 21:31

کراچی، آئی ایس او کے زیر اہتمام عظیم الشان مرکزی آزادی القدس ریلی کا انعقاد، ہزاروں افراد کی شرکت

کراچی، آئی ایس او کے زیر اہتمام عظیم الشان مرکزی آزادی القدس ریلی کا انعقاد، ہزاروں افراد کی شرکت
اسلام ٹائمز۔ امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کراچی ڈویژن کے زیر اہتمام جمعة الوداع عالمی یوم القدس بفرمان حضرت امام خمینیؒ کے موقع پر مرکزی القدس ریلی نمائش چورنگی تا تبت سینٹر نکالی گئی۔ ریلی میں خواتین، بچوں، بزرگوں سمیت ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ شرکائے ریلی نے ہاتھوں میں پاکستانی، فلسطینی اور آزادی القدس کے پرچم اٹھا رکھے تھے، جبکہ پلے کارڈز اور بینرز بھی اٹھا رکھے تھے، جن پر امریکا مردہ باد، اسرائیل نامنظور و دیگر نعرے درج تھے، مرکزی آزادی القدس ریلی میں بچوں کے خصوصی دستے تیار کئے گئے تھے، جنہوں نے سروں پر سرخ پٹیاں باندھ رکھی تھیں، جن پر یا قدس ہم آ رہے ہیں کے نعرے درج تھے۔ گذشتہ دنوں اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے شہید ہونے والی غزہ کی پٹی میں زخمیوں کو طبی امداد فراہم کرنے میں پیش پیش رہنے والی 21 سالہ فلسطینی نرس رازان نجار کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے مرکزی القدس میں پاکستانی ڈاکٹرز، پیرامیڈیکل، فارماسسٹ و دیگر طبی شعبوں سے وابستہ افراد نے لیب کوٹ میں ملبوس ہوکر شرکت کی۔

ریلی سے آئی ایس او پاکستان کے مرکزی صدر انصر مہدی، مجلس وحدت المسلمین کے مرکزی رہنما علامہ امین شہیدی، ال پاکستان شیعہ ایکشن کمیٹی کے مرکزی رہنما علامہ مرزا یوسف حسین، جمعیت علمائے پاکستان نورانی سندھ کے صدر علامہ عقیل انجم، علامہ ظہیر الحسن نقوی و دیگر نے خطاب کئے۔ ریلی سے خطاب کرتے ہوئے انصر مہدی نے کہا کہ مسلمان اقوام کو چاہئیے کہ متحد ہو کر قبلہ اول کی آزادی کیلئے جدوجہد کریں، یہ مسلم امہ کی کمزوری ہے کہ آج 69 برس سے غاصب صیہونی اسرائیلی حکومت قبلہ اول پر قابض ہے اور مسلم امہ خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ امام خمینیؒ ؒنے ماہ رمضان المبارک کے جمعة الوداع کو عالمی یوم القدس قرار دے کر مظلوموں اور ظالموں میں واضح فرق بتا دیا ہے، آج پوری دنیا میں امام خمینیؒ کے فرمان کے مطابق مسلمانوں سمیت دیگر مذاہب کے لوگ بھی القدس ریلیاں اور مظاپرے منعقد کر رہی ہیں، جو اس بات کی دلیل ہے کہ القدس کی آزادی عنقریب ہے۔

علامہ امین شہیدی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایک طرف اسرائیل مظلوم فلسطینیوں کا قتل عام کر رہا ہے، تو دوسری جانب مسلم دنیا بالخصوص عرب دنیا کے حکمران اسرائیلی حکومت کے ساتھ اپنے تعلقات استوار کرکے فلسطینیوں کی تحریک آزادی کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان پر بھی عرب ممالک کا دباؤ ہے کہ اسرائیل کو تسلیم کر لیا جائے، لیکن پاکستان کے عوام ہرگز ایسا نہیں ہونے دیں گے۔ جے یو پی نورانی سندھ صدر علامہ عقیل انجم کا کہنا تھا کہ امریکا اور اسرائیل سمیت مغربی قوتیں مسلمانوں کو تقسیم اور فرقہ واریت میں ملوث کرکے مسئلہ فلسطین اور القدس کی آزادی سے توجہ ہٹانا چاہتی ہیں، جس کی واضح مثال چند ناعاقبت اندیش عرب ممالک کی جانب سے فرقہ وارانہ ملٹری الائنس تشکیل دینا ہے، اگر کوئی ملٹری الائنس بنانا ہی مقصود ہے، تو پھر سب سے پہلے قبلہ اول بیت المقدس کی آزادی اور کشمیر کی آزادی کیلئے بنایا جانا چاہیے۔

ریلی سے خطاب کرتے ہوئے علامہ مرزا یوسف حسین نے کہا کہ القدس کی آزادی کیلئے جدوجہد جاری رہے گی، اگر عرب ممالک کی طرح پاکستان میں بھی اسرائیل کے تسلیم کرنے یا اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات کی بات کی گئی، تو پاکستان کا بچہ بچہ سڑکوں پر نکل آئے گا، لیکن حکمرانوں کو اجازت نہیں دیں گے کہ وہ مسلمانوں کے قبلہ اول پر سودے بازی کریں اور مظلوم فلسطینیوں کی تحریک آزادی کو زک پہنچائی جائے۔ اس موقع شرکائے ریلی نے امریکا مردہ باد، اسرائیل نامنظور، القدس کی آزادی کیلئے فلک شگاف نعرے بلند کئے، جبکہ شرکائے ریلی نے امریکی و اسرائیلی حکمرانوں کے پتلوں سمیت امریکی اسرائیلی پرچم بھی نذر آتش کئے۔ ریلی کے اختتام پر رہنماؤں نے مشترکہ قرار داد پیش کی، جس میں دنیا بھر کے مسلم حکمرانوں سے مطالبہ کیا کہ وہ مظلوم فلسطینیوں پر اسرائیلی مظالم اور قبلہ اول بیت المقدس کی آزادی کیلئے اپنا کردار ادا کریں، جبکہ بحریں، یمن، نائیجریا میں چلنے والی اسلامی تحریکوں اور مظلوم فلسطینی مسلمانوں کے حق میں اٹھنے والی تمام مذاحمتی تنظیموں حماس، حزب اللہ سمیت حریت پسند فلسطینی تنظیموں کی حمایت کا اعلان کیا گیا۔
خبر کا کوڈ : 730374
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش