0
Tuesday 26 Jun 2018 20:02

قرآن پاک میں جنات کا ذکر آتا ہے، خلائی مخلوق کا مجھے نہیں پتا، شہباز شریف

قرآن پاک میں جنات کا ذکر آتا ہے، خلائی مخلوق کا مجھے نہیں پتا، شہباز شریف
اسلام ٹائمز۔ مسلم لیگ (ن) کے صدر میاں شہبازشریف کا کہنا ہے کہ قرآن پاک میں جنات کا ذکر آتا ہے اور خلائی مخلوق کا مجھے نہیں پتا۔ کراچی میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے کہا کہ رینجرز نے جانفشانی اور قربانی سے کراچی کا امن بحال کیا، آج کراچی میں ٹارگٹ کلنگ اور بھتا خوری نہ ہونے کے برابر ہے، شہر کا امن لوٹ آیا ہے جو بہت بڑی کامیابی ہے، اب یہاں روزگار، پانی، ٹرانسپورٹ دینے اور کچرا صاف کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنی الیکشن مہم کا آغاز کراچی سے کیا ہے، موقع ملا تو سندھ کو پنجاب سے اور کراچی کو لاہور سے بہتر بنا کر دکھائیں گے، ہماری اور مخالفین کی کارکردگی کا موازنہ کریں، دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوجائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ کراچی میں ہمارے پاس حکومت نہیں تھی، ہمیں پنجاب میں لوگوں نے مینڈیٹ دیا، کیا تھر میں کوئلے سے بجلی کے کارخانے لگانا مسلم لیگ (ن) کا کام تھا۔ سابق وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ جو وعدے کئے وہ کارکردگی کی بنیاد پر کئے، پان کھانے والے کراچی کو میں لاہور بناؤں گا۔ ایک سوال کے جواب میں شہباز شریف کا کہنا تھا کہ قرآن پاک میں جنات کا ذکر آتا ہے، خلائی مخلوق کا مجھے نہیں پتا۔ صحافی کے سوال پر کہ پنجاب میں کون کامیاب ہوگا، عمران خان یا آپ کی جماعت؟ شہباز شریف نے جواب دیا میں کوئی پیر نہیں ہوں۔

اس سے قبل کراچی کے مقامی ہوٹل میں بزنس پروفیشنلز اور ینگ پروفیشنلز کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے شہباز شریف کا کہنا تھا کہ گزشتہ 5 سالوں میں بجلی کی پیداوار میں اضافہ کیا ہے، بھاشا ڈیم ہماری پہلی ترجیح ہوگی، یہ ڈیم پاکستان کے لئے ناگزیر ہے اور اس کا کوئی نعم البدل نہیں، بھاشا ڈیم کے لئے ہم نےتمام اقدامات کرلئے ہیں اور فزیبلٹی تیار ہے، اب جو بھی حکومت آئے گی اسے بھاشا ڈیم بنانا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں چھوٹے ڈیم بھی بنیں گے، کالا باغ ڈیم پر بحث کرنا فضول ہے، جب تک کالاباغ ڈیم پر سب متفق نہیں ہوں گے وہ نہیں بنے گا۔ سابق وزیراعلیٰ کا کہنا تھاکہ کراچی میں گرین لائن کے علاوہ تین نئی سروس چلائیں گے، شہر میں سالڈ ویسٹ مینجمنٹ تباہ ہوچکی یہ مسئلہ بھی حل کریں گے۔ مسلم لیگ (ن) کے صدر نے کہا کہ برآمدات میں اضافے کے بغیر ترقی ممکن نہیں، ملک میں کاروبار کی سہولت کے لئے ون ونڈو آپریشن شروع کریں گے، گرین پاسپورٹ کی عزت کے لئے کشکول توڑنا ہوگا اور معیشت کو ترقی دینا ہوگی۔
خبر کا کوڈ : 733807
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب