0
Tuesday 10 Jul 2018 12:26

پیپلز پارٹی کا نیب سے تحریک انصاف کے رہنماؤں کیخلاف تحقیقات تیز کرنیکا مطالبہ

پیپلز پارٹی کا نیب سے تحریک انصاف کے رہنماؤں کیخلاف تحقیقات تیز کرنیکا مطالبہ
اسلام ٹائمز۔ پاکستان پیپلز پارٹی نے قومیس احتساب بیورو (نیب) سے مطالبہ کیا ہے کہ خیبر پختونخوا میں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے 5 سالہ دور حکومت میں شروع کئے جانے والے میگا پروجیکٹس میں بدعنوانی کی تحقیقات میں تیزی لائی جائے، تاکہ قصورواروں کو 25 جولائی کو ہونے والے عام انتخابات سے قبل کیفر کردار تک پہنچایا جا سکے۔ پشاور میں اپنی رہائش گاہ پر منعقدہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پی پی پی کے رہنما اور سابق صوبائی صدر سید ظہیر علی شاہ نے دعویٰ کیا کہ 1 ارب درخت لگانے کے منصوبے اور بس ریپیڈ ٹرانزٹ جیسے بڑے منصوبوں میں اربوں روپے کی کرپشن کی گئی۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ نیب نے ان اسکیموں کی تحقیقات کا آغاز کیا تھا لیکن کارروائی انتہائی سست روی سے جاری ہے۔ اس موقع پر ان کے ہمراہ سینیٹر روبینہ خالد، ذوالفقار افغانی، سابق اراکین صوبائی اسمبلی نگہت اورکزئی، ضیا اللہ آفریدی اور پیپلز پاڑی کے دیگر سینیئر کارکنان موجود تھے۔

سید ظہیر علی شاہ کا مزید کہنا تھا کہ پی ٹی آئی نے صوبے کی عوام کی فلاح و بہبود کیلئے کچھ نہیں کیا جبکہ بی آر ٹی منصوبے سے پشاور شہر کی سڑکیں برباد کر دی۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان ہمیشہ پنجاب کے میٹرو بس منصوبوں کو تنقید کا نشانہ بناتے رہے، لیکن دوسری جانب خود ان کی صوبائی حکومت نے ہی بی آر ٹی منصوبے کا آغاز کیا جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ پی ٹی آئی کے لوگوں میں اتنی قابلیت نہیں کہ دوسروں کی نقل کرنے کے بجائے خود سے کوئی منصوبہ پیش کر سکیں۔ پی پی پی رہنماؤں نے یہ بھی دعویٰ کیا گیا کہ اگر نیب پوری تن دہی سے ان منصوبوں کی تحقیقات کرے تو تحریک اںصاف کے کئی رہنما جیل کی سلاخوں کے پیچھے ہوں گے۔
خبر کا کوڈ : 736908
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب