0
Sunday 22 Jul 2018 15:29

غیرمصدقہ مواد کے لنکس روکنے کیلئے وٹس ایپ نے کام شروع کردیا

غیرمصدقہ مواد کے لنکس روکنے کیلئے وٹس ایپ نے کام شروع کردیا
اسلام ٹائمز۔ واٹس ایپ پر گزشتہ کچھ عرصے سے ایسے لنکس وائرل ہورہے ہیں جن کا مواد جھوٹا، بے بنیاد یا غیر حقیقی ہوتا ہے، جسے واٹس ایپ کمپنی نے خطرہ قرار دیا ہے۔ ایسے میں ٹیکنالوجی ویب سائٹ میش ایبل کے مطابق واٹس ایپ تمام غیر مصدقہ لنکس کے لیے اینٹی اسپیم (anti-spam) فیچر جلد متعارف کرنے والا ہے، جس کی آزمائش جاری ہے۔ اس فیچر کا مقصد ان لنکس کو پکڑنا ہے، جو بظاہر تو جانے پہچانے لگتے ہیں لیکن ان میں اسپیلنگ کی غلطی یا عجیب و غریب حروف ہوتے ہیں۔ ایسی صورت میں اینٹی اسپیم فیچر موصول ہونے والے لنک کو خود کار طریقے سے شناخت کے بعد اسے مشکوک قرار دے گا جو کہ سرخ رنگ کے خانے میں نمایاں ہوگا۔ ایک مثال میں دیکھایا گیا ہے کہ بظاہر تو لنک میں لکھا گیا مواد اسپیلنگ کے لحاظ سے ٹھیک ہے لیکن اس میں لکھی گئی واٹس ایپ اسپیلنگ کے w میں فرق ہے یعنی صرف ڈبلیو نہیں لکھا ہوا، بلکہ اس کے ساتھ ایک ڈاٹ یعنی نقطے کا بھی اضافہ ہے۔ اس قسم کی حرکت کو آئی ڈی این ہومو گراف کہا جاتا ہے جسے ہیکرز استعمال کرتے ہیں اور صارفین کو نقصان پہنچاتے ہیں۔ تو ان کی تصدیق کیجیے کیونکہ یہ چیزیں اکثر غلط معلومات کی نشانی ہوتی ہیں۔ واضح رہے کہ چند روز قبل واٹس ایپ نے ایک اخباری اشتہار کے ذریعے غلط یا جھوٹی معلومات کی پہچان کے حوالے سے صارفین کو کچھ ٹپس بھی فراہم کی تھیں۔

دوسری جانب واٹس ایپ نے ایک اخباری اشتہار کے ذریعے جاری کردہ ہدایات میں کہا ہے کہ صارفین کو سمجھداری سے پیغامات کا جائزہ لینا ہو گا کہ آیا وہ درست ہیں یا افواہیں یا وہ پھر مکمل طور پر غلط ہیں۔ واٹس ایپ نے اشتہار میں بڑے حروف میں یہ تحریر کیا ہے کہ ہم مل کر جھوٹی معلومات کے خلاف لڑ سکتے ہیں۔ واٹس ایپ نے غلط یا جھوٹی معلومات کی پہچان کے حوالے سے صارفین کو کچھ ٹپس فراہم کی ہیں جو کہ مندرجہ ذیل ہیں:

1۔ فارورڈ میسج کی پہچان:
واٹس ایپ پر رواں ہفتے سے ایک نیا فیچر متعارف کیا گیا ہے جس کے ذریعے یہ معلوم ہو جاتا ہے کہ موصول شدہ پیغام فارورڈ میسج ہے یا کسی نے خود لکھا ہے۔ واٹس ایپ کا کہنا ہے کہ صارفین فارورڈ میسجز میں بیان کی گئی معلومات کی تصدیق کریں۔

2۔ خوف پھیلانے والے پیغامات پر سوال اٹھائیں:
واٹس ایپ پر اکثر ایسے پیغامات گردش کرتے ہیں جن سےصارفین غصہ، خوف یا تناؤ کا شکار ہوجاتے ہیں۔ اگر آپ کو لگے کہ یہ پیغامات ایسا ہی کرنے کے لیے بھیجے گئے ہیں تو انہیں فارورڈ کرنے سے پہلے دو مرتبہ ضرور سوچیں۔

3۔ ناقابل یقین معلومات کی تحقیق کریں:
وہ اسٹوریز جن پر یقین کرنا مشکل ہو اکثر جھوٹی ہوتی ہیں تو کوشش کی جائے کہ ان کی کسی اور جگہ سے تصدیق کی جائے۔

4۔ مختلف نظر آنے والے پیغامات کی تصدیق کریں:
واٹس ایپ پر متعدد پیغامات میں جھوٹی خبریں موصول ہوتی ہیں جن کی نشانی اسپیلنگ کی غلطیاں اور حقیقی خبر سے مختلف انداز ہے ایسا محسوس ہونے کی صورت میں درست معلومات کے لیے تحقیق کریں۔

5۔ میسجز میں مصول ہونے والی تصاویر کی تصدیق کریں:
واٹس ایپ میسجز اور ویڈیوز پر بھروسہ کرنا آسان ہوتا ہے لیکن یاد رکھیے یہ بھی ایڈیٹنگ کا شکار ہوسکتی ہیں، کبھی تصویر حقیقی ہوتی ہے لیکن اس میں بیان کی گئی کہانی جھوٹی ہوتی ہے ایسی صورت میں ان تصاویر کو آن لائن ضرور دیکھیں اور ان کی تصدیق کریں۔

6۔ لنکس کی تصدیق کیجیے:
میسجز میں موصول ہوئے ویب سائٹ لنکس بظاہر تو جانے پہچانے لگتے ہیں لیکن اگر ان میں اسپیلنگ کی غلطی یا عجیب و غریب حروف نظر آئیں تو ان کی تصدیق کیجیے۔ یہ چیزیں اکثر غلط معلومات کی نشانی ہوتی ہیں۔

7۔ خبروں کی مختلف ذرائع سے تصدیق کریں:
ایسی کوئی بھی خبر ویب لنک یا ایپ سے موصول ہوتی ہے تو اس کی دیگر ذرائع سے ضرور تصدیق کیجیے۔ اگر یہی خبر دیگر ویب سائٹس پر موجود ہوتو اس کے  درست ہونے کے امکان زیادہ ہوتے ہیں۔

8۔ پیغام کو سوچ سمجھ کر شیئر کریں:
اگر آپ کسی پیغام کے بارے میں یہ وثوق سے نہیں کہ سکتے کہ آیا وہ پیغام غلط ہے یا صحیح تو ایسی صورت میں میسج کو فارورڈ کرنے سے پہلے ضرور سوچیں۔

9۔ پرائیوسی لگائی جا سکتی ہے:
واٹس ایپ میں کسی بھی خدشے کی صورت میں نمبر بلاک اور گروپ چھوڑا جا سکتا ہے جو ایپ کی پرائیوسی کے فیچرز ہیں۔

10۔ جھوٹی خبریں اور مواد زیادہ وائرل ہوتا ہے:
اس بات کا خاص خیال رکھیں کے ایک سے زائد مرتبہ موصول ہونے والا پیغام ضروری نہیں کہ حقیقت ہو اس لیے ہر صورت میں پیغام کی تصدیق کرنا لازم ہے۔
 
خبر کا کوڈ : 739452
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

ہماری پیشکش