1
Wednesday 12 Sep 2018 09:25

ادلب میں دہشت گرد قابل تحمل نہیں ہیں، اقوام متحدہ

ادلب میں دہشت گرد قابل تحمل نہیں ہیں، اقوام متحدہ
اسلام ٹائمز۔ اقوام متحدہ نے عربیہ جمہوری سوریہ کے صوبہ ادلب میں دہشت گردوں کو ختم کرنے کیلئے ایران ، روس اور ترکی سے مدد مانگی ہے۔ اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوٹیرش نے کہا ہے کہ شام کے صوبہ ادلب میں دہشت گردوں کو اب مزید تحمل نہیں کیا جا سکتا۔ سیکرٹری جنرل نے ایران، روس اور ترکی سے کہا ہے کہ وہ شام کے اس صوبہ میں شہریوں کی حفاظت کیلئے ضروری اقدامات انجام دیں۔
 
رویٹرز کے مطابق گوٹیرش نے روس، ایران اور ترکی سے کہا ہے کہ شہریوں کی جان و مال کی حفاظت کی خاطر مطلوبہ راہ حل تک پہنچنے کیلئے اپنی پوری کوشش کریں۔ سیکرٹری جنرل کا کہنا تھا کہ یہ بہت ضروری ہے کہ ایسی کوشش کی جائیں جن کے ذریعے وہاں مکمل جنگ سے بچا جا سکے۔ سیکرٹری جنرل نے گذشتہ روز بروز منگل شام کے صوبے ادلب کی صورتحال پر گفتگو کی۔
 
واضح رہے ادلب شام کا وہ صوبہ ہے جو اس وقت دہشت گردوں کا آخری ٹھکانہ ہے۔ ان دہشت گردوں نے مسلح جتھوں کے ذریعے بشار الاسد کی حکومت کو ختم کرنے کی خاطر ملک کے طول و عرض میں مسلح جدوجہد شروع کی تھی جس میں ان کو بعض عرب ممالک سمیت یورپ، امریکہ اور اسرائیل کی حمایت حاصل تھی۔ صوبہ ادلب میں تحریر الشام (جبھہ النصرہ) سمیت جیش البادیہ، الملاحم، احرار الشام جیسے بہت سے چھوٹے بڑے دہشت گرد گروہ جمع ہیں۔
 
سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ نے صحافیوں سے اس بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ مجھے اندازہ ہے کہ صوبہ ادلب کی موجودہ صورتحال کو اب مزید برداشت نہیں کیا جا سکتا اور اس علاقے میں ان دہشت گرد گروہوں کیلئے مزید کوئی جگہ نہیں ہے لیکن دہشت گردوں کے خلاف جنگ کے دوران تمام اطراف کو بین الاقوامی بنیادی قوانین کا خاص خیال رکھنا چاہیئے۔
خبر کا کوڈ : 749529
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب