0
Friday 10 Jun 2011 23:56

اسلام آباد میں 64 مساجد اور 134 غیرقانونی مدارس کا انکشاف

اسلام آباد میں 64 مساجد اور 134 غیرقانونی مدارس کا انکشاف
لاہور:اسلام ٹائمز۔ سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے کابینہ ڈویژن کی خصوصی کمیٹی کے اجلاس میں سی ڈی اے حکام نے انکشاف کیا ہے کہ وفاقی دارالحکومت میں 64 مساجد بغیر کسی قانون اور منظوری کے تعمیر کی گئی ہیں، 134 مساجد کے ساتھ مدارس غیر قانونی طور پر قائم کئے گئے ہیں، غیر قانونی مساجد اور مدارس کے متعلق رپورٹ وزارت داخلہ کو بھجوا دی گئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق سینٹ کی کابینہ کی خصوصی کمیٹی کا اجلاس کمیٹی کے کنوینر سینیٹر شاہد بگٹی کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہاﺅس میں ہوا۔ اجلاس میں قائمہ کمیٹی نے سی ڈی اے کے لیگل ڈیپارٹمنٹ کی کارکردگی پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس اہم شعبے کی کارکردگی کو بہتر بنانا ہو گا۔ اجلاس میں سی ڈی اے کے حکام نے کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ سی ڈی اے، سپیشل برانچ اور اسلام آباد انتظامیہ نے وفاقی دارالحکومت میں قائم غیرقانونی مساجد اور مدارس کے حوالے سے ایک سروے کیا تھا جس کی رپورٹ وزارت داخلہ کو بھجوا دی گئی ہے۔
سروے کے مطابق 64 مساجد غیر قانونی طور پر بغیر کسی قواعد و ضوابط اسلام آباد کے مختلف سیکٹرز میں تعمیر کی گئیں ہیں۔ حکام نے بتایا کہ سی ڈی اے نے اسلام آباد میں 10 مدارس کو پلان کے تحت قائم کیا ہے، تاہم اسلام آباد میں 134 مساجد کے ساتھ بنائے جانے والے مدارس غیر قانونی ہیں، جن کے حوالے سے تمام تفصیلات سے وزارت داخلہ کو آگاہ کر دیا گیا ہے اور کاروائی کرنا وزارت داخلہ کی ذمہ داری ہے۔
خبر کا کوڈ : 78004
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش