0
Friday 13 Sep 2019 15:30
عالمی برادری نے انسانیت پر تجارت کو ترجیح دی

ایمٹی ملکوں کے مابین جنگ، خطے کیلئے شدید خطرناک ہو گی، عمران خان

مقبوضہ وادی میں بھارتی حکومت مسلمانوں کی نسل کشی کرنا چاہتی ہے
ایمٹی ملکوں کے مابین جنگ، خطے کیلئے شدید خطرناک ہو گی، عمران خان
اسلام ٹائمز۔ وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ غیر ملکی ممالک کے لیے معیشت اور تجارت انسانوں سے زیادہ اہم ہے، اسی وجہ سے عالمی برادری نے مقبوضہ کشمیر پر وہ ردعمل نہیں دیا جو دینا چاہیئے تھا۔ اپنے انٹرویو میں وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر کے لوگوں کا یہ حق ہے کہ وہ اس بات کا فیصلہ کریں کہ وہ بھارت کے ساتھ الحاق چاہتے ہیں، پاکستان کے ساتھ رہنا چاہتے ہیں یا پھر آزاد ملک کی طرح رہنا چاہتے ہیں، ہم نے کشمیر کے لیے تین جنگیں لڑی ہیں، بھارت کے طاقت کے استعمال سے مقبوضہ کشمیر میں تحریک آزادی نے زور پکڑا۔ اس وقت مقبوضہ کشمیر میں 9 لاکھ سے زائد قابض بھارتی فورسز تعینات ہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کے لوگ آزادی چاہتے ہیں اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے تحت ان کو حق خودارادیت ملنا چاہیے، بدقسمتی کے ساتھ بھارت کشمیریوں کو یہ حق دینے سے قاصر ہے، بھارت نے مقبوضہ کشمیر کا یک طرفہ طور پر فیصلہ کیا، بھارت مقبوضہ وادی کی جغرافیائی خدوخال بدلنا چاہتا ہے اور وادی کی مسلم اکثریت کو اقلیت میں تبدیل کرنا چاہتا ہے تاہم بھارت کا یہ اقدام کشمیریوں کو قبول نہیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ غیر ملکی ممالک کے لیے معیشت اور تجارت انسانوں سے زیادہ اہم ہے اسی وجہ سے عالمی برادری نے مقبوضہ کشمیر پر وہ ردعمل نہیں دیا جو دینا چاہیے تھا، مقبوضہ کشمیر کی صورتحال شام سے بھی بدتر ہو سکتی ہے، بی جے پی کا ہندو قوم پرست نظریہ پورے بھارت میں عروج پر ہے، بی جے پی کا ایجنڈا انتخابات میں ہی واضع تھا۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ مقبوضہ وادی میں بھارتی حکومت مسلمانوں کی نسل کشی کرنا چاہتی ہے، بھارتی اقدام اقوام متحدہ کی قراردادوں کے خلاف ہے، 2 ایٹمی ممالک کے درمیان چھڑنے والی جنگ خطے کے لیے شدید خطرہ ہو گی، اگر عالمی ممالک خاموش رہے تو وادی میں حالات مزید بگڑ جائیں گے۔
خبر کا کوڈ : 815983
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب