0
Thursday 19 Sep 2019 08:27
نالائق اور نااہل وزیراعظم کیخلاف احجتجا کا لائحہ عمل بنایا ہے

ہمیشہ اہم موقع پر ہی کیوں اہم شخصیت کی گرفتاری ہوتی ہے، بلاول بھٹو زرداری

ہمیشہ اہم موقع پر ہی کیوں اہم شخصیت کی گرفتاری ہوتی ہے، بلاول بھٹو زرداری
اسلام ٹائمز۔ چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ نااہل اور نالائق وزیراعظم نے ملک میں جمہوریت کا جنازہ نکال دیا ہے۔ پیپلز پارٹی کی کور کمیٹی کے اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے چیئرمین پی پی پی بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ نیب کا کالا قانون آمر پرویز مشرف کا بنایا ہوا ہے، یہ حکومت بھی حکومت نیب کے زور اور دباؤ پرچل رہی ہے اور آج بھی نیب کو پولیٹیکل انجئیرنگ کیلئے ہی استعمال کیا جا رہا ہے، سیاسی انتقام نیب سے شروع ہوتا ہے اور نیب پر ختم ہوتا ہے۔ خورشید شاہ کی گرفتاری کی مذمت کرتے ہوئے بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ ہر اہم موقع پر ہی کوئی نہ کوئی گرفتاری عمل میں آتی ہے، میں عید کی نماز پڑھنے مظفر آباد جا رہا تھا تو رات کے اندھیرے میں فریال تالپور کو اسپتال سے جیل منتقل کر دیا گیا، ایک اور اہم موقع پر مریم نواز کو گرفتار کیا گیا۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ نالائق ناجائز احمق وزیراعظم کی وجہ سے کشمیر کاز کو نقصان ہو رہا ہے، آج کشمیر کے معاملے پر یکجہتی کا مظاہرہ کرنے کی ضرورت تھی، آج سینیٹ کے اٹھائے گئے اہم سیمینار کے دوران خورشید شاہ کو گرفتار کر لیا گیا تا کہ کشمیر کی ناکامی پر بات کرنے کے بجائے توجہ بدل جائے، اصل میں کشمیر مسئلے پر حکومت نے اپنی بدترین ناکامی کو چھپانے اور عوام کی توجہ مسئلہ کشمیر سے ہٹانے کے لیے خورشیدشاہ کو گرفتار کیا، ہم اس حکومت کی نالائقی کو برداشت نہیں کریں گے، ہم نے آج اپنا احتجاجی لائحہ عمل تیار کیا ہے۔ چیئرمین پی پی نے کہا کہ نااہل اور نالائق وزیراعظم نے ملک میں جمہوریت کا جنازہ نکال دیا ہے، وہ اپنے سیاسی مخالفین کو قیدی بنا رہا ہے اور اپنے ملک میں انسانی حقوق کی دھجیاں اڑا رہے ہیں، دوسری جانب عوام مہنگائی کی چکی میں پس رہے ہیں، جب مزدوروں کے لئے کوئی ریلیف نہیں تو ارب پتیوں کے لئے اسکیمیں کیوں لائی جارہی ہیں۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے حکومت اور ان کے سہولت کاروں کو ڈیڈ لائن دی ہے، اکتوبر میں مولانا فضل الرحمان کا دھرنا ہے اور ہم نے اس کی اخلاقی حمایت کا اعلان کیا ہے، جمہوری اداروں اور نظام کو نقصان نہیں پہنچنا چاہیے، ہم ماضی میں کسی دھرنے کا حصہ بنے نہ آئندہ کسی دھرنے کا حصہ بنیں گے، کسی بھی صورت کسی پی این اے جیسے الائنس کا حصہ نہیں بن سکتا۔ آئندہ عام انتخابات انتخابی اصلاحات کے مطابق ہونے چاہئیں تاکہ ان حالات سے بچ سکیں جن سے گزشتہ الیکشن میں دوچار ہوئے، موجودہ قوانین کے تحت دوبارہ عام انتخابات کا فائدہ نہیں ہو گا۔

چیئرمین پی پی نے کہا کہ اب اس حکومت کو ہم برداشت نہیں کرسکتے، مہنگائی اور معاشی صورتحال کی خرابی کو بنیاد بنا کر احتجاج کریں گے، ہم نے اپنے احتجاج کا لائحہ عمل بنایا ہے، پیپلز پارٹی عوامی مسائل پر احتجاج کر رہی ہے، احتجاجی پروگرام سندھ سے شروع ہو کر پنجاب میں داخل ہوگا۔
خبر کا کوڈ : 817006
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب