1
0
Friday 27 Sep 2019 08:10

امریکی صدر نے ایران کیساتھ ثالثی اور افغان مسئلے میں مدد کیلئے کہا ہے، عمران خان

امریکی صدر نے ایران کیساتھ ثالثی اور افغان مسئلے میں مدد کیلئے کہا ہے، عمران خان
اسلام ٹائمز۔ وزیراعظم پاکستان عمران خان نے کہا ہے کہ امریکی صدر نے ایران کے ساتھ ثالثی اور افغان مسئلے میں مدد کے لئے کہا ہے۔ امریکی ٹی وی کو دیئے گئے ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ پاک امریکہ تعلقات تاریخ کی بہترین سطح پر ہیں، جبکہ بھارت پر بھی امریکہ کا اچھا اثر و رسوخ ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ دنیا کا سب سے بڑا ملک ہے، صدر ٹرمپ مسئلہ کشمیر حل کرا سکتے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ جنگ کسی مسئلے کا حل نہیں، کوئی صاحب عقل انسان  ایٹمی ہتھیار استعمال نہیں کرسکتا۔

وزیراعظم نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں 80 لاکھ افراد کو بھارت نے یرغمال بنایا ہوا ہے، اس مسئلے پر سلامتی کونسل کی 11 قراردادیں موجود ہیں، مقبوضہ وادی میں کرفیو اٹھائے جانے کے بعد قتل و غارت کا اندیشہ ہے۔ افغان جنگ کے متعلق سوال پر وزیراعظم نے کہا کہ  برطانیہ اور روس سمیت کوئی بھی طاقت افغانوں کو شکست نہ دے سکی اور اس معاملے کا کوئی فوجی حل نہیں ہے۔ انہوں نے کہا اگر میں امریکی ہوتا تو پوچھتا کہ 1.5 کھرب ڈالر پھونک کر افغان جنگ سے کیا حاصل کیا۔؟ عمران خان کا کہنا تھا کہ افغان جہاد کے بعد پاکستان کو تنہا چھوڑ دیا گیا، امریکہ نے پابندیاں عائد کر دیں۔
خبر کا کوڈ : 818594
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

نورسید
Pakistan
صدر ٹرمپ سے مسئلہ کشمیر حل کروانے کی امید فضول ہے،
کیونکہ جو 50 روزہ کرفیو ہٹوا نہیں سکتا، وہ مسئلہ حل کیسے کرے گا۔!
منتخب