0
Friday 8 Nov 2019 23:34

یکطرفہ طور پر متنازعہ قوانین پاس کرانا مطلق العنانہ سوچ کی عکاسی ہے، نیر حسین بخاری

یکطرفہ طور پر متنازعہ قوانین پاس کرانا مطلق العنانہ سوچ کی عکاسی ہے، نیر حسین بخاری
اسلام ٹائمز۔ سابق چیئرمین سینیٹ اور پاکستان پیپلز پارٹی کے سیکرٹری جنرل سید نیئر حسین بخاری نے یکطرفہ قانون سازی پر کڑی تنقید کرتے ہوئے اپوزیشن کو بحث کی اجازت دیئے بغیر قومی اسمبلی سے آرڈینینسز اور بلز پاس کرانا حکمرانوں کے غیر جمہوری طرز عمل کا تسلسل قرار دیا ہے۔ پیپلزپارٹی میڈیا سیل کی طرف سے جاری اعلامیے کے مطابق انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ کو بلڈوز کرنا جمہوریت کے لئے زہر قاتل ہے، پارلیمنٹ میں جلد بازیاں ثابت کر رہی ہیں کہ نالائقوں کی گھر روانگی نوشتہ دیوار ہے۔ نیر بخاری نے مزید کہا کہ پارلیمنٹ پر حملہ آور ہونے والی ذہنیت پارلیمنٹ کی بے توقیری کے درجہ اول پر فائز ہے۔

انہوں نے کہا کہ یکطرفہ قانون سازی سے متنازعہ قوانین پاس کرانا مطلق العنانہ سوچ کی عکاسی ہے۔ نیر بخاری نے مزید کہا کہ جمہوریت سے نابلد حکمرانوں کو علم ہونا چاہیئے کہ قومی و عوامی مفاد کی قانون سازی پر تو اپوزیشن کی رائے اور تجاویز کا احترام کیا جاتا ہے، سوال یہ ہے کہ کیا بلڈوز کئے گئے بلز اور آرڈینینسز قومی عوامی مفاد کی بجائے کسی کے ذاتی مفاد میں ہیں۔؟ پیپلز پارٹی کے سیکرٹری جنرل نیئر بخاری نے مزید کہا کہ آرڈیننس میں توسیع سے ثابت ہوگیا کہ نااہل حکمران پارلیمنٹ کا اعتماد کھو چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ میں جلد بازیاں ثابت کر رہی ہیں کہ نالائقوں کی گھر روانگی نوشتہ دیوار ہے۔
خبر کا کوڈ : 826325
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے