0
Monday 11 Nov 2019 22:55

 بابری مسجد کا فیصلہ تضادات سے بھرپور ہے اور انصاف پر مبنی نہیں، یہ فیصلہ کرتا پور راہداری کے کھلنے کے دن دیا گیا، شاہ محمود قریشی 

 بابری مسجد کا فیصلہ تضادات سے بھرپور ہے اور انصاف پر مبنی نہیں، یہ فیصلہ کرتا پور راہداری کے کھلنے کے دن دیا گیا، شاہ محمود قریشی 
اسلام ٹائمز۔ وزیرخارجہ مخدوم شاہ محمودقریشی نے کہا ہے کہ نوازشریف کو علاج کے لئے بیرون ملک جانا چاہیے، ان کی حالت تشویشناک ہے، حکومت نے ان کے باہر جانے میں کوئی رکاوٹ پیدا نہیں کی، ہم دعاگو ہیں کہ وہ صحت یاب ہوکر واپس آئیں اور سیاست شروع کریں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے انصار کالونی میں عید میلادالنبی کے جلوس میں شرکت سے قبل میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ صوبائی معاون خصوصی حاجی جاوید اختر انصاری بھی اس موقع پر موجود تھے۔انہوں نے کہا اگر بلاول کو شکوہ ہے تو وہ بھی اپنے والد آصف علی زرداری کی بیماری کے ٹھوس ثبوت دیں ہم اس پر بھی غور کریں گے۔ وزیرخارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے بابری مسجد کیس کے فیصلے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ بابری مسجد کا فیصلہ تضادات سے بھرپور ہے اور انصاف پر مبنی نہیں، یہ فیصلہ کرتا پور راہداری کے کھلنے کے دن دیا گیا۔ ہم نے کرتار پور راہداری کھول کے خیرسگالی کا پیغام دیا جبکہ ہندوستان میں اقلیتوں پر جگہ تنگ کی جا رہی ہے، مودی صاحب اگر کشمیر میں کرفیو ختم کر دیں اور کالے قوانین بھی ختم کر دیں تو ہم بھی ان کا شکریہ ادا کریں گے۔ انہوں نے کہاکہ 98 روز سے کشمیر میں مسلسل کرفیو نافذ ہے، علی گڑھ میں بھی انٹرنیٹ سروس معطل کر دی گئی ہے، بھارت کالے قوانین کے ذریعے انسانی حقوق پامال کر رہا ہے۔ وزیرخارجہ نے مزید کہا کہ اب بھارت گاندھی اور نہرو کا بھارت نہیں رہا بلکہ آر ایس ایس کا ہندوستان معرض وجود میں آ رہا ہے۔
خبر کا کوڈ : 826865
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب