0
Tuesday 12 Nov 2019 23:55
اوور بلنگ اور اوور ریڈنگ کا سختی سے نوٹس لیا جائے

گندم کا ریٹ 1500، گنے کا 300 روپے من کیا جائے، پاکستان کسان اتحاد کا مطالبہ

گندم کا ریٹ 1500، گنے کا 300 روپے من کیا جائے، پاکستان کسان اتحاد کا مطالبہ
اسلام ٹائمز۔ پاکستان کسان اتحاد نے مطالبہ کیا کہ گندم کا ریٹ 1500روپے من، گنے کا کم از کم 250 سے 300 روپے من کیا جائے۔ زرعی ٹیوب ویلز فیول پرائس ایڈجسمنٹ ٹیکس کا خاتمہ اور ٹیرف میں کمی کی جائے۔ اوور بلنگ اور اوور ریڈنگ کا سختی سے نوٹس لیا جائے۔ یہ مطالبہ آج لاہور میں پاکستان کسان اتحاد کے مرکزی صدر خالد محمود کھوکھر نے چیف سیکرٹری پنجاب سے ملاقات میں کیا۔ اس موقع پر چیف سیکرٹری پنجاب یوسف نسیم کھوکھر نے کہا ہے کہ گنے گندم وغیرہ کے ریٹ سمیت حکومت کسانوں کے جملہ مسائل پر سنجیدگی سے غور کر رہی ہے. سٹیک ہولڈر کو تفصیلی سنا جا چکا ہے۔ چیف سیکرٹری پنجاب نے یہ بات آج لاہور میں پاکستان کسان اتحاد کے مرکزی صدر خالد محمود کھوکھر سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کی۔

انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت کسانوں کے مسائل کے حل کے حوالے سے وفاقی حکومت سے مکمل رابطے میں ہے۔ حکومت زراعت کی اہمیت اور کسانوں کے مسائل سے بھی آگاہ ہے۔ یوسف نسیم کھوکھر نے کہا کہ کوئی بھی فیصلہ کرنے سے قبل حکومت اس کے تمام پہلوؤں پر غور کرتی اور دیکھتی ہے۔ کسان اتحاد کے مرکزی صدر خالد محمود کھوکھر نے کہا کہ مہنگائی اور پیداواری اخراجات میں اضافے کے پیش نظر کسانوں کی فصلات کے ریٹس میں اضافہ کسانوں کا جائز حق ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ گندم کا ریٹ 1500 روپے من، گنے کا کم از کم 250 سے 300 روپے من کیا جائے۔ زرعی ٹیوب ویلز فیول پرائس ایڈجسمنٹ ٹیکس کا خاتمہ اور ٹیرف میں کمی کی جائے۔ اوور بلنگ اور اوور ریڈنگ کا سختی سے نوٹس لیا جائے۔

صدر پاکستان کسان اتحاد نے کہا کہ بل درستگی کے لئے دفتروں کے چکر بھی کسانوں پر بڑے بھاری اور مہنگے پڑتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ چینی کے ریٹ کے ساتھ گنے کے ریٹ میں بھی اضافہ ضروری تھا جو کہ ابھی تک نہیں کیا گیا۔ کسان سخت مایوس اور پریشان ہیں۔ چیف سیکرٹری پنجاب سے ملاقات کے بعد پاکستان کسان اتحاد کے ڈسٹرکٹ آرگنائزر ضلع رحیم یار خان جام ایم ڈی گانگا سے ٹیلی فون پر گفتگو کرتے ہوئے خالد محمود کھوکھر نے مزید کہا کہ کسان اتحاد کسانوں کے حقوق کی آواز ہر فورم پر بلند کرے گا۔ کسانوں کو ان کی فصلات کے جائز ریٹس دلانے کی جدوجہد کو جاری رکھیں گے۔ خالد محمود کھوکھر نے کہا کہ اس کے لئے کسانوں کو سڑکوں پر بھی آنا پڑا تو وہ آئیں گے۔ اپنے مسائل کے حل اور حقوق کے حصول کے لئے کسانوں کو بھی نیند سے بیدار ہو کر کسان تحریک کے ساتھ عملی جدوجہد کرنی ہوگی۔
خبر کا کوڈ : 827059
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب