0
Friday 22 Nov 2019 19:56

پشاور بی آر ٹی رواں سال بھی مکمل نہیں ہو سکے گا

پشاور بی آر ٹی رواں سال بھی مکمل نہیں ہو سکے گا
اسلام ٹائمز۔ پشاور بس ریپڈ ٹرانزٹ (بی آر ٹی) منصوبے کی ایک اور ڈیڈلائن سامنے گئی، کنٹریکٹر نے حکومت مارچ 2020ء تک منصوبہ مکمل ہونے کی تاریخ دے دی۔
پشاور بی آر ٹی رواں سال بھی مکمل نہیں ہو سکے گا، صوبائی حکومت کی دی ہوئی ایک اور ڈیڈلائن گزرجانے کے خدشات پید ا ہوگئے۔ سرکاری ذرائع کے مطابق بی آر ٹی کے 30 بس اسٹیشنوں پر کام مکمل نہیں ہوا، جبکہ 14 بس اسٹیشنوں پر جنوری کے آخر میں کام مکمل ہوگا۔ منصوبے کے کنٹریکٹر نے اگلے سال مارچ میں کام مکمل ہونے کی نئی تاریخ دی ہے، صوبائی حکومت نے دسمبر 2019ء میں منصوبہ مکمل ہونے کی چھٹی ڈیڈلائن دی تھی۔
دوسری جانب ڈی جی پی ڈی اے محمد عزیز نے کہا ہے کہ منصوبے کو رواں مالی سال (20-2019) کے اندر ہی مکمل کیا جائے گا۔ ذرائع کے مطابق بی آر ٹی کے 30 بس اسٹیشنوں پر کام مکمل نہیں ہوا، چمکنی سے امن چوک تک 16 اسٹیشنوں پر 90 فیصد کام مکمل ہے، ان پر دسمبر کے آخر تک کام مکمل ہوگا جبکہ امن چوک سے حیات آباد تک کے 14 اسٹیشنوں پر 85 فیصد کام مکمل کیا جاچکا ہے، ان پر کام جنوری کے آخر میں مکمل ہو جائے گا۔ ذرائع کے مطابق بی آر ٹی کے لئے 3 ڈپوز پر بھی کام مکمل نہیں کیا جا سکتا ہے، حیات آباد بس ڈپو پر 10 فیصد کام بھی مکمل نہیں کیا گیا ہے،جبکہ حیات آباد سے کارخانو مارکیٹ تک اضافی روٹ پر بھی کام مکمل نہیں کیا جا سکا ہے، ان روٹس پر کام جنوری کے آخر میں مکمل کیا جاسکتا ہے۔ منصوبے کے ڈی جی پی ڈی اے محمد عزیز نے کہا ہے کہ بی آر ٹی منصوبے پر کام رواں مالی سال کے اندر مکمل کرلیں گے، ایشائی ترقیاتی بینک کے ساتھ جو لون ایگریمنٹ کیا گیا ہے، اس کے تحت منصوبہ جون 2021ء میں مکمل ہونا ہے اور بینک سے کئے گئے معاہدے کے تحت کام کی رفتار بہت تیز ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی آر ٹی عوام کے لئے حکومت کا بہترین تحفہ ہے، جس میں خصوصی افراد کے سوار ہونے کے لئے ریمپ جبکہ شہریوں کے لئے سائیکل ٹریک اور تینوں ڈپوز پر پارک اینڈ رائیڈ کی سہولت ہوگی۔
خبر کا کوڈ : 828499
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب