0
Monday 25 Nov 2019 09:11

دفعہ 370 کی منسوخی پر بھاجپا کی سیاست کا کوئی خریدار نہیں ہے، این سی

دفعہ 370 کی منسوخی پر بھاجپا کی سیاست کا کوئی خریدار نہیں ہے، این سی
اسلام ٹائمز۔ جموں و کشمیر نیشنل کانفرنس نے کہا کہ حکومت ہند کی طرف سے جموں و کشمیر کو دو لخت کرنے اور مرکزی زیر انتظام علاقہ بنانے کے فیصلے کو کسی بھی خطے کے لوگوں نے قبول نہیں کیا ہے۔ این سی کے بیان میں کہا گیا کہ بھارتی حکومت کا یہ فیصلہ زمینی سطح پر بالکل ناکام دکھائی دے رہا ہے۔ کشمیر نیوز سروس کے مطابق این سے نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ سیاسی لیڈروں، سول سوسائٹی، وکلاء اور دیگر شہریوں کی مسلسل نظر بندی اور انٹرنیٹ و پری پیڈ موبائل سروس پر ساڑھے تین ماہ سے جاری پابندی بھارتی حکومت کے غیر دانشمندانہ اقدام کی ناکامی کی عکاسی کرتے ہیں۔ بیان میں کہا گیا کہ بھارتی حکومت کشمیر کے سیاسی لیڈروں کی نظر بندی کا یہ کہہ کر جواز پیش کررہی ہے کہ یہ لیڈران رہا ہوکر احتجاج کریں گے۔ این سی نے کہا کہ جہاں احتجاج کرنے کی اجازت نہ ہو اس ملک کی جمہوریت پر خود بخود سوالیہ نشان لگ جاتا ہے۔ بیان میں کہا گیا کہ حقیقت یہ ہے کہ 5 اگست کو بی جے پی کی بھارتی حکومت کی طرف سے لئے گئے غیر جمہوری اور غیر آئینی فیصلے زمینی سطح پر ناکام ہوگئے ہیں اور ملک کے عوام نے بھی دفعہ 370 اور 35 اے کی منسوخی کے بھارتیہ جنتا پارٹی کے فیصلے کو مسترد کیا ہے۔ بیان میں سیاسی لیڈروں کی رہائی اور مواصلاتی خدمات کی بحال کا مطالبہ بھی دہرایا گیا۔
 
خبر کا کوڈ : 828866
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش