0
Saturday 7 Dec 2019 12:28

پاکستانی نژاد امریکی صحافی آمنہ نواز نے امریکی صدارتی مباحثے کے لیے ماڈریٹر منتخب

پاکستانی نژاد امریکی صحافی آمنہ نواز نے امریکی صدارتی مباحثے کے لیے ماڈریٹر منتخب
اسلام ٹائمز۔ آئندہ ہونیوالے امریکی صدارتی انتخابات سے قبل پاکستانی نژاد امریکی صحافی آمنہ نواز نے امریکی صدارتی مباحثے کے لیے ماڈریٹر منتخب ہو کر تاریخ رقم کردی، وہ یہ اعزاز پانے والی پہلی جنوبی ایشیائی امریکی صحافی ہیں۔ پی بی ایس نیوز آور سے وابستہ آمنہ نواز ریاست کیلیفورنیا کے شہر لاس اینجلس کی لویولا میری ماؤنٹ یونیورسٹی میں 19 دسمبر کو ہونے والے ڈیموکریٹ پارٹی کے چھٹے پرائمری مباحثے کو ماڈریٹ (نظامت) کریں گی۔ پی بی ایس نیوز آور کے اینکر اور منیجنگ ایڈیٹر ووڈرف پینل کی سربراہی کریں گے جس میں پولیٹکو کمپنی کے چیف پولیٹیکل نمائندے ٹم البرٹا اور پی بی ایس نیوز آور کے وائٹ ہاؤس نمائندے یمیچ الکنڈور بھی شامل ہوں گے۔ امریکی ریاست ورجینیا میں پیدا ہونے والی آمنہ نواز اپریل 2018ء میں پی بی ایس نیوز آور سے وابستہ ہوئی تھیں اور اب سینئر قومی نمائندہ اور متبادل اینکر کے طور پر فرائض انجام دیتی ہیں۔ پی بی ایس نیوز آور سے قبل وہ اے بی سی نیوز میں نمائندے اور اینکر کی حیثیت سے کام کرتی تھیں اور وہیں انہوں نے 2016ء کے صدارتی انتخابات کی کوریج بھی کی تھی۔

اس سے قبل وہ این بی سی نیوز میں غیر ملکی نمائندے کی حیثیت سے کام کرتی تھیں اور سرحدی خطے کے علاوہ، پاکستان، افغانستان، شام اور ترکی کی رپورٹنگ کرتی تھیں۔ وہ این بی سی کے ایشیئن امریکن پلیٹ فارم کی بانی اور سابق منیجنگ ڈائریکٹر تھیں جو امریکا کی تیزی سے بڑھتی ہوئی آبادی کی آواز بلند کرنے کے لیے بنایا گیا تھا۔ نیوز آور میں آمنہ نواز نے سیاست، امور خارجہ، تعلیم، موسمیاتی تبدیلی، ثقافت اور کھیل کے حولے سے رپورٹنگ کی۔ اس کے ساتھ انہوں نے ٹرمپ حکومت کی امیگریشن پالیسیوں کے اثرات، حراست، مہاجرین اور پناہ کے ساتھ ساتھ امریکی حکومت کی حراست میں موجود مہاجرین بچوں کے حوالے سے رپورٹنگ کی تھی۔ آمنہ نواز نے کئی اہم شخصیات کے بھی انٹرویوز کیے جن میں ترک صدر رجب طیب اردوان، اسکاٹ لینڈ کے وزیر نکولا اسٹرجن اور برازیلین رہنما ایڈوارڈو بولسو نارو، قانون ساز اور ٹرمپ حکومت کے عہدیداران شامل ہیں۔ انہوں نے موسمیاتی تبدیلوں پر ایمزون کے اندر سے اور پناہ گزینوں کے مسئلے پر وینزویلا سے بھی رپورٹنگ کی۔ 2019ء میں انہیں نیوز آور کی پلاسٹک کے عالمی مسئلے کے اوپر بنائی گئی سیریز میں رپورٹنگ پر پی باڈی ایوارڈ سے بھی نوازا گیا تھا۔
خبر کا کوڈ : 831275
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش