?>?> توہین اہلبیت (ع) کے مرتکب ملزمان کو گرفتار کیوں نہیں کیا جا رہا، علامہ تصور جوادی - اسلام ٹائمز
0
Monday 18 May 2020 22:54

توہین اہلبیت (ع) کے مرتکب ملزمان کو گرفتار کیوں نہیں کیا جا رہا، علامہ تصور جوادی

توہین اہلبیت (ع) کے مرتکب ملزمان کو گرفتار کیوں نہیں کیا جا رہا، علامہ تصور جوادی
اسلام ٹائمز۔ سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین آزاد جموں و کشمیر علامہ سید تصور حسین نقوی الجوادی سے سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین ضلع جہلم ویلی ہٹیاں بالا سید عاطف حسین ہمدانی نے وفد کے ہمراہ ملاقات کی۔ ملاقات میں ریاستی سیکرٹری جنرل کو ہٹیاں بالا کے شیعہ اسیران  کے کیس کی صورتحال سے آگاہ کیا گیا، جس پر ریاستی سیکرٹری جنرل نے کہا کہ ملت کے جو لوگ اعلیٰ عہدوں پر فائز ہیں, انہیں ملت کے مجبور و نادار اور اسیر افراد کی خدمت کرنی چاہیئے۔ اس موقع پر علامہ جوادی نے نہایت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آخر کیا وجہ ہے کہ قانون نافذ کرنے والے ادارے توہین اہلبیت (ع) خصوصاً توہین امام زمانہ (عج) کے مرتکب افراد کے خلاف درج FIR کے ملزمان کو گرفتار کرنے میں ابھی تک ناکام ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ عمل بھی باعث تشویش ہے کہ واضح تاریخی شواہد ہونے کے باوجود عدلیہ نے شیعہ نوجوانوں کی ضمانتیں مسترد کر دیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ملت تشیع چودہ سو سال سے پابند سلاسل بھی رہی، قتل بھی ہوئی، گولیاں بھی کھائیں، شمشیر و سنا کا نشانہ بھی بنی، لیکن نہ اس قوم کو دبایا جاسکا ہے، نہ اس سے کبھی باطل کی اطاعت کروائی جاسکتی ہے۔

علامہ سید تصور حسین نقوی نے مزید کہا کہ ہم نے سرزمین کوئٹہ میں سو سے زیادہ لاشیں اٹھائیں، لیکن ایک پتا تک نہیں توڑا، اسی طرح سانحہ بابوسر ٹاپ، سانحہ چلاس اور دیگر مختلف سانحات میں ملت نے باوقار احتجاج کیا، لیکن نہ قومی املاک کو نقصان پہنچایا نہ ہی اور کسی کا نقصان کیا۔ انہوں نے کہا کہ جو حملہ فروری 2017ء میں ان پر کیا گیا تھا، اس کا منصوبہ یہ تھا کہ یہاں خطے کے امن کو سبوتاژ کیا جائے، یہاں کی شیعہ سنی عوام کو باہم دست و گریبان کر دیا جائے، لیکن میں سلام پیش کرتا ہوں کشمیری ملت کو دونوں طرف کے علماء اور ذمہ داران کو جنھوں نے حالات کو کنٹرول میں رکھا اور کسی بھی شخص کو قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دی، لیکن اب جو موجودہ صورتحال پیدا ہوچکی ہے، یہ ہمیں شدت پسندی کی طرف مائل کر رہی ہے، کہیں ایسا نہ ہو کہ ابھی تک تو ہم صبر سے کام لے رہے ہیں، لیکن دلیل و برہان سے کام نہ چلا تو عملی میدان میں بھی آنے کے لیے ہم تیار ہیں۔ ہماری امن پسندی کو ہماری کمزوری نہ سمجھا جائے۔ وفد میں سید عاطف ہمدانی کے ہمراہ سید شجاعت علی ہمدانی، سید ابرار حسین ہمدانی، سید تنویر حسین اور سید اسد ہمدانی شامل تھے۔
خبر کا کوڈ : 863255
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش