0
Saturday 23 May 2020 21:47

بھارت میں گزشتہ برس پچاس لاکھ سے زیادہ لوگ بے گھر ہوئے ہیں، اقوام متحدہ

بھارت میں گزشتہ برس پچاس لاکھ سے زیادہ لوگ بے گھر ہوئے ہیں، اقوام متحدہ
اسلام ٹائمز۔ شدید سمندری طوفان ’’امفان‘‘ کی وجہ سے مغربی بنگال اور اوڈیشہ میں بڑی تعداد میں لوگوں کے بے گھر ہونے کی اطلاعات کے درمیان اقوام متحدہ کی طرف سے جاری رپورٹ سامنے آئی ہے جس میں گزشتہ برس 2019ء میں ملک میں قدرتی آفت، تنازعات اور تشدد کے واقعات کی وجہ سے پچاس لاکھ سے زیادہ افراد داخلی طور پر بے گھر ہوئے ہیں۔ اقوام متحدہ کے بچوں کا فنڈ (یونیسیف) کی ’لاسٹ ایٹ ہوم‘ کے عنوان والی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ برس پوری دنیا میں بے گھر ہونے کے تقریباًً 330 لاکھ نئے معاملے درج کئے گئے۔ ان میں نقل مکانی کے تقریباً 250 لاکھ قدرتی آفت اور 80.5 لاکھ معاملے تنازعات اور تشدد کے واقعات سے منسلک ہیں۔

رپورٹ کے مطابق بھارت میں 2019ء میں 5037000 داخلی نقل مکانی کے اعداد و شمار میں 5018000 معاملے قدرتی آفت سے متعلق اور 19000 معاملات تنازعات اور تشدد کے واقعات سے منسلک ہیں۔ یونیسیف کی رپورٹ کے مطابق بھارت، فلپائن اور چین قدرتی آفات سے بہت زیادہ متاثر ہیں جس کی وجہ سے لاکھوں کی تعداد میں لوگوں کو نقل مکانی پر مجبور ہونا پڑ رہا ہے۔ ان ممالک میں قدرتی آفت سے بے گھر ہونے کے معاملات پوری دنیا کے 69 فیصد ہیں۔
خبر کا کوڈ : 864523
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش