0
Friday 29 May 2020 03:28

حکومت سندھ کراچی کے ہسپتالوں میں جگہ کے اضافے کیلئے کوشاں

حکومت سندھ کراچی کے ہسپتالوں میں جگہ کے اضافے کیلئے کوشاں
اسلام ٹائمز۔ سندھ کے محکمہ صحت نے کہا ہے کہ وہ کراچی میں ہسپتالوں میں جگہ کے اضافے کے لئے کوشاں ہے تاکہ کورونا وائرس کا شکار مریضوں کا علاج کیا جا سکے۔ سندھ میں اب تک 25 ہزار 309 افراد میں وائرس کی تشخیص ہوئی ہے جو ملک بھر میں کسی بھی صوبے میں رپورٹ ہونے والے کیسز کی سب سے بڑی تعداد ہے جبکہ صوبے میں 396 افراد ہلاک بھی ہوئے ہیں۔ اب تک صوبے میں رپورٹ ہونے والے کیسز میں سے 20 ہزار 193 کیسز کراچی سے رپورٹ ہوئے ہیں۔ 28 مئی کو جاری حکومت سندھ کی ایک دستاویز کے مطابق صوبے میں اس وقت کورونا کے مریضوں کے لئے انتہائی نگہداشت کے 226 بستر میسر ہیں۔ ان میں سے 118 کراچی میں ہیں جس میں 103 ابھی زیر استعمال ہیں۔ دوسری جانب سندھ میں اس وقت 287 ہائی ڈیپنڈنسی یونٹ ہیں جن میں سے کراچی میں موجود 174 میں سے 163 زیر استعمال ہیں۔ صوبے میں ایک ہزار 189 آئسولیشن بیڈز ہیں جن میں کراچی میں 312 ہیں، البتہ اس میں خصوصی آئسولیشن سینٹرز میں دستیاب جگہ شامل نہیں جیسا کہ کراچی ایکسپو سینٹر میں بنایا گیا ہے۔

محکمہ صحت کے مطابق ایکسپو سینٹر میں بھی دستیاب ایک ہزار 200 بستروں میں سے آدھے زیر استعمال ہیں۔ ان اعداد و شمار کے تناظر میں محکمہ صحت سندھ نے کہا ہے کہ وہ آئندہ چند دنوں میں ہسپتالوں میں بستروں کے اضافے کے سلسلے میں کام کر رہے ہیں۔ محکمہ صحت اور شہری بہبود کی میڈیا کوآرڈینیٹر میران یوسف نے ذرائع سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ نیپا کے ہسپتال میں 200 بستروں کا اضافہ کیا جائے گا جس میں سے 140 ہائی ڈیپنڈنسی یونٹ ہوں گے اور بقیہ آئی سی یو ہوں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس کے علاوہ گلستان جوہر میں بنائے گئے آئسولیشن یونٹ میں مزید 50 بستروں کا اضافہ کیا جائے گا جبکہ آئندہ 10 دنوں میں ڈاؤ یونیورسٹی کے اوجھا کیمپس میں بھی 38 بستروں کا اضافہ کیا جائے گا۔ میران یوسف نے مزید بتایا کہ سول ہسپتال ہائی ڈیپنڈنسی یونٹ میں 150 بستروں جبکہ آئندہ ہفتے میں لیاری جنرل ہسپتال میں 55 بستروں کا اضافہ کیا جائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ مزید 200 وینٹی لیٹرز کی فراہمی بھی یقینی بنانے کی کوشش کر رہے ہیں اور اس سلسلے میں تین کمپنیوں کو آرڈر دیئے جا چکے ہیں، مسئلہ یہ ہے کہ پوری دنیا کو اس کمی کا سامنا ہے۔

انہوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ لوگ اس بیماری کو جس طرح سے نظر انداز کر رہے ہیں، اس کو دیکھتے ہوئے وینٹی لیٹرز کی یہ تعداد بھی کافی نہیں ہوگی، ہم صورتحال کا بغور جائزہ لے رہے ہیں اور مریضوں کی تعداد بڑھنے کی صورت میں ہمیں بستروں کی تعداد میں بھی اضافہ کرنا پڑے گا۔ یاد رہے کہ گزشتہ روز وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے نیپا پر قائم انفیکشیز ڈیزیز ہسپتال کا دورہ کیا تھا جہاں انہیں سیکریٹری صحت نے بریفنگ دی تھی۔ ایک پریس ریلیز کے مطابق وہ نیپا پر قائم ہسپتال کے تعمیراتی کام کی تکمیل اور دیگر سہولیات کی فراہمی کے لئے 1.2 ارب روہے جا ری کرچکے ہیں اور انہوں نے ایک ماہ کے عرصے میں تمام کام مکمل کرنے کی ہدایت کی ہے۔
خبر کا کوڈ : 865356
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش