0
Sunday 31 May 2020 00:55

مولانا فضل الرحمن کا چھٹے خلیفہ عمر بن العزیز کے مزار کی بے حرمتی پر شدید غم و غصے کا اظہار

مولانا فضل الرحمن کا چھٹے خلیفہ عمر بن العزیز کے مزار کی بے حرمتی پر شدید غم و غصے کا اظہار
اسلام ٹائمز۔ جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے شام کے صوبہ ادلب میں واقع چھٹے خلیفہ اسلام حضرت عمر بن عبدالعزیز کے مزار کی شرپسند عناصر کے ہاتھوں بےحرمتی اور پامالی پر شدید غم و غصے کا اظہار کیا ہے۔ مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ اس دل دہلا دینے والے واقعے سے عالم اسلام کے دل و دماغ لرز اٹھے ہیں۔ جے یو آئی جیکب آباد کے ضلعی امیر ڈاکٹر اے جی انصاری کی جانب سے جاری پریس ریلیز کی مطابق مولانا فضل الرحمن کا مزید کہنا تھا کہ اس اندوہناک واقعے پر امت مسلمہ کے دل رنجیدہ اور خون کے آنسو رو رہے ہیں، واقعے پر اسلامی ممالک کے حکمرانوں کی خاموش سوالیہ نشان ہے، اسلامی دنیا اور او آئی سی تنظیم فوراً ایکشن لے کر خلیفہ عمر بن عبدالعزیز کے مزار کو اصل حالت میں بحالی کو یقینی بنائیں اور ذمہ داروں کو عبرت کا نشانہ بنائیں۔ انہوں نے کہا کہ اسلام مدفون انسانوں کے اجساد و باقیات کی تضحیک کی کسی صورت اجازت نہیں دیتا۔

مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ خلیفہ عمر بن عبدالعزیز صحابہ کرام کی علامت، امت کے مجدد اول اور عالم اسلام کی قابل فخر علامت تھے، ان کا دور حکومت عدل و انصاف اور مساوات کا درخشندہ یادگار تھا، وہ اہل بیت اور پورے عالم اسلام کے محسن منصف حکمران تھے۔ مولانا فضل الرحمن نے خلیفہ عمر بن عبدالعزیز کے مزار کی بےحرمتی اور اہلیہ سمیت دیگر کے جسد خاکی کی توہین اور باقیات کو نذر آتش کرنے کیساتھ مزار سے منتقلی انتہائی مذموم اور قبیح فعل قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ اس دلخراش واقعے کی جتنی مذمت کی جائے وہ کم ہے۔ انہوں نے کہا کہ حضرت عمر بن عبدالعزیز کے مزار کی بے حرمتی پر اسلامی دنیا کے رہنماؤں اور حکمرانوں کو پوری دنیا میں مؤثر احتجاج اور بروقت اقدامات کرنے چاہئیں۔
خبر کا کوڈ : 865688
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش