0
Saturday 11 Jul 2020 02:14

جماعت اسلامی کا وفاقی حکومت سے کے الیکٹرک کو اپنی تحویل میں لینے کا مطالبہ

جماعت اسلامی کا وفاقی حکومت سے کے الیکٹرک کو اپنی تحویل میں لینے کا مطالبہ
اسلام ٹائمز۔ جماعت اسلامی نے وفاقی حکومت سے کے الیکٹرک کو اپنی تحویل میں لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کل  شارع فیصل پر دھرنا دینے کا اعلان کیا ہے۔ کراچی میں سندھ ہائی کورٹ کے سامنے کے الیکڑک کے خلاف جماعت اسلامی کی جانب سے احتجاج کیا گیا۔ اس موقع پر مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمان کا کہنا تھا کہ کے الیکٹرک 26 لاکھ صارفین کو بجلی فراہم کرنے میں ناکام ہوگئی ہے، اس کا لائسنس منسوخ کرکے فوری طور پر قومی تحویل میں لیا جائے۔ حافظ نعیم الرحمان کا کہنا تھا کہ کے الیکٹرک والوں نے شہریوں کی زندگی اجیرن کر رکھی ہے اور پاکستان تحریک انصاف اور متحدہ قومی موومنٹ دونوں کے الیکٹرک کے اتحادی ہیں اور دکھاوے کا احتجاج کررہی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) کی آج ہونے والی سماعت میں ہمیں شرکت کرنے کا موقع نہیں دیا گیا، ہم نے آج شہر کے 100 سے زائد مقامات پر احتجاج کیا ہے اور کل شارع فیصل پر دھرنا دیں گے۔ خیال رہے کہ کراچی میں 8 سے 10 گھنٹے کی بدترین اعلانیہ و غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ نے شہریوں کا جینا دوبھر کر رکھا ہے جب کہ بجلی کی بندش سے پانی کا بحران بھی جنم لے چکا ہے۔ گذشتہ روز وزیراعظم عمران خان نے کراچی میں لوڈشیڈنگ کا نوٹس لیتے ہوئے کے الیکٹرک کو اضافی گیس فراہم کرنے کی ہدایت کی تھی جس کے بعد کے الیکٹرک کو اضافی گیس کی فراہمی کے باعث سی این جی اسٹیشن 2 روز کے لئے بند کردیئے گئے۔
خبر کا کوڈ : 873666
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

ہماری پیشکش