0
Monday 19 Oct 2020 22:06

مقبوضہ کشمیر کی خصوصی پوزیشن کو بحال کیا جائے، شیخ مصطفٰی کمال

مقبوضہ کشمیر کی خصوصی پوزیشن کو بحال کیا جائے، شیخ مصطفٰی کمال
اسلام ٹائمز۔ جموں و کشمیر کی شناخت، انفرادیت اور وحدت کے ایجنڈا کو قائم رکھنے کو نیشنل کانفرنس کا عزم قرار دیتے ہوئے پارٹی کے معاون جنرل سیکرٹری ڈاکٹر شیخ مصطفی کمال نے کہا کہ ان کی جماعت اس موقف پر ہمیشہ قائم رہے گی۔ پارٹی کارکنوں اور وفود سے تبادلہ خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جموں کشمیر کو جو خصوصی درجہ آج سے 80 برس قبل آئین ہند کے تحت ملا، اس کو بدقسمتی سے دہلی کے سخت گیر اور تنگ نظریہ حکمرانوں نے طاقت کے بل پر منسوخ کیا۔ ڈاکٹر مصطفٰی کمال کا کہنا تھا کہ بھارت کے اس فیصلے پر انسانیت، جمہوریت اور امن پسند اقوام کے علاوہ بھارت کی سب جمہوریت نواز جماعتیں نالاں و برہم ہے۔

جموں کشمیر کی خصوصی پوزیشن کی بحالی کا مطالبہ کرتے ہوئے نیشنل کانفرنس کے معاون جنرل سیکرٹری نے کہا کہ بھارت کے بڑے قانون دانوں کے علاوہ کانگریس کے بڑے لیڈروں اور سیکولر طاقتوں نے واضح کیا ہے کہ کشمیر بھارت میں نہ ضم ہوا ہے اور نا ہی ہوگا، جبکہ اس کی اپنی علیحدہ انفرادیت اور آئینی حیثیت دفعہ 370 اور 35 اے کے تحت ہے، جس کی تائید اولین صدر ہند ڈاکٹر راجندر پرشاد، اولین وزیراعظم جواہر لعل نہرو، سرداد پٹیل، شیاما پرساد مکھرجی اور مولانا ابوالکلام آزاد نے بھی کی، جبکہ آنجہانی ہری سنگھ جو ملک کشمیر کے خودمختار بادشاہ تھے، نے ہی 35 اے اور دفعہ 370 کے تحت ہندوستان سے رشتہ جوڑا۔ انہوں نے دہلی کے حکمرانوں کو کشمیری عوام کے ساتھ انصاف کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کشمیریوں کو خصوصی پوزیشن واپس دینے کا مطالبہ کیا۔
خبر کا کوڈ : 892906
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

ہماری پیشکش