0
Tuesday 24 Nov 2020 23:42

پاک افغان سرحد پر 4 کلومیٹر طویل ریلوے ٹریک بنانے کا فیصلہ

پاک افغان سرحد پر 4 کلومیٹر طویل ریلوے ٹریک بنانے کا فیصلہ
اسلام ٹائمز۔ حکومت نے پاک افغان سرحد پر اسمگلنگ کی روک تھام کے لیے 4 کلومیٹر طویل ریلوے کا ڈبل ٹریک بنانے کا فیصلہ کیا ہے، جس کے لیے 800 فریٹ ویگنز بھی خریدی جائیں گی۔ قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے ریلوے کا اجلاس چیئرمین معین وٹو کی زیر صدارت منعقد ہوا، جس میں سیکریٹری ریلوے نے کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ وزارت ریلوے نے پاک افغان سرحد پر اسمگلنگ کی روک تھام کے لیے بڑے منصوبے پر کام شروع کر دیا جس کے فریم ورک کو حتمی شکل دے دی گئی، پاک افغان سرحد پر اسمگلنگ کی روک تھام کے لیے چمن تا افغان سرحد ریلوے ٹریک بچھایا جائے گا، افغان سرحد تک بچھایا جانے والا ٹریک ڈبل اور 4 کلومیٹر طویل ہوگا۔

سیکرٹری ریلوے نے مزید بتایا کہ ریلوے ٹریک پر ایک طویل ٹنل بنائی جائے گی جبکہ سامان کو افغان سرحد تک پہنچانے کے لیے 800 ویگنز بھی خریدی جا رہی ہیں جس پر چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ چمن بارڈر پر ایف بی آر کا بارڈر سروس پراجیکٹ پر تنازع ہے، ایف بی آر نے افغان سرحد پر ٹرمینل کا نقشہ تیار کر لیا ہے۔ وزارت ریلوے کے مطابق ٹرمینل ریلوے ٹریک کی گزرگاہ ہے، بارڈر سروس پراجیکٹ کی تعمیر این ایل سی کر رہی ہے۔
اس موقع پر ایف بی آر حکام نے بارڈر سروس پراجیکٹ پر بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ چمن بارڈ پر بارڈر سروس پراجیکٹ کی تعمیر کی جا رہی ہے، ریلوے کے مطابق بی سی پی کی زد میں ان کی اراضی آ رہی ہے، منصوبےکے نقشے میں تبدیلی پر لاگت 80 ملین ڈالرز بڑھ جائے گی۔
خبر کا کوڈ : 899763
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش