0
Monday 4 Jan 2021 23:07
شہید جنرل قاسم سلیمانی و ابو مہدی المہندس کی پہلی برسی

غزہ، شہید کمانڈرز کی پہلی برسی پر "زینب سلیمانی" کا فلسطینی قوم کے نام خصوصی پیغام

غزہ، شہید کمانڈرز کی پہلی برسی پر "زینب سلیمانی" کا فلسطینی قوم کے نام خصوصی پیغام
اسلام ٹائمز۔ گذشتہ سال امریکی دہشتگردانہ ٹارگٹ کلنگ میں شہید ہونے والے ایرانی سپاہ قدس کے کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی، عراقی حشد الشعبی کے ڈپٹی کمانڈر ابومہدی المہندس اور ساتھیوں کی پہلی برسی کے موقع پر فلسطینی شہر غزہ میں ایک عالیشان تقریب منعقد کی گئی، جس میں شہید قاسم سلیمانی کی بیٹی زینب سلیمانی کا خصوصی پیغام بھی پڑھ کر سنایا گیا۔ فلسطینی ای مجلے فلسطین الیوم کے مطابق "شہید القدس" کے عنوان سے منعقد کی جانے والی اس تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عوامی مزاحمتی فورس حماس کے سیکرٹری سیاسیات محمود الزہار نے تاکید کی ہے کہ گو کہ سردار سلیمانی عراقی سرزمین پر شہید ہوئے ہیں، تاہم یہ ان کا راسخ عقیدہ تھا کہ "بلاد مسلمین" کے درمیان کسی قسم کی سرحدیں موجود نہیں۔ محمود الزہار نے کہا کہ شہید جنرل قاسم سلیمانی نے امتِ مسلمہ کا دفاع کرنے والے مزاحمتکاروں کی حمایت میں ذرہ برابر کوتاہی کی اور نہ ہی اپنی ہمہ جانبہ حمایت کے حوالے سے کبھی مذہبی بنیاد پر کوئی فرق روا رکھا ہے۔

اس موقع پر فلسطینی مزاحمتی فورس الجہاد الاسلامی فی فلسطین کے سیکرٹری سیاسیات خالد البطش نے اپنی گفتگو میں تاکید کی کہ غزہ کی پٹی میں فوجی ڈھانچے کی تشکیل کے دوران شہید جنرل قاسم سلیمانی ہر فلسطینی گروہ کے ساتھ شریک رہے، جس کے دوران سینکڑوں بلکہ ہزاروں فلسطینی مجاہدین نے بطور احسن جنگی فنون سیکھے۔ انہوں نے کہا کہ شہید جنرل قاسم سلیمانی نے فلسطینی مزاحتمی محاذ کی بھرپور حمایت اور انہیں انواع و اقسام کے جدید اسلحے سے لیس کرکے اسلامی جمہوریہ ایران کے نعروں کو عملی شکل دی۔ انہوں نے تاکید کی کہ جنرل قاسم سلیمانی درحقیقت مختلف مزاحمتی شرکاء کے ایک ایسے عظیم پراجیکٹ کے بانی ہیں، جس میں زبان، مذہب، نسل اور عقیدے کے اختلاف کی کوئی اہمیت نہیں۔

فلسطین الیوم کے مطابق جہاد اسلامی فلسطین کے مرکزی رہنماء نے زور دیتے ہوئے کہا کہ جنرل قاسم سلیمانی کی شہادت کسی طور ان کے پراجیکٹ کی موت کے مترادف نہیں، کیونکہ ایک شہید لاکھوں افراد کو زندہ کر جاتا ہے، جبکہ بزدلانہ کارروائیوں کے ذریعے کمانڈرز کو نشانہ بنانے کا عمل خود اس بات کا کھلا ثبوت ہے کہ وہ بالکل درست رَستے پر عمل پیرا تھے۔ خالد البطش نے کہا کہ فلسطین سے لبنان اور شام سے عراق و یمن تک تمام مزاحمتی محاذوں کے درمیان وحدت ہی شہید جنرل قاسم سلیمانی اور ان کے بھائیوں کا حقیقی ہدف تھا، جبکہ ان کی دہشتگردانہ ٹارگٹ کلنگ بھی غاصب صیہونی رژیم کے مقابلے میں حاصل ہونے والی اسی وحدت کے عمل کو روکنے کے لئے انجام دی گئی ہے۔ جہاد اسلامی کے سیکرٹری سیاسیات نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ شہید جنرل قاسم سلیمانی نے نہ صرف اپنی زندگی کے دوران امریکی مذموم منصوبوں کے سامنے ڈٹ کر اُسے ذلیل کیا بلکہ اپنی مظلومانہ شہادت کے ذریعے بھی امریکہ کو دوسرے حوالے سے خوار کرکے رکھ دیا، کہا کہ غاصب صیہونی رژیم اس جرم میں برابر کی شریک ہے، جس کا اُسے ضرور حساب دینا ہوگا۔

اس تقریب میں شہید جنرل قاسم سلیمانی کی بیٹی زینب سلیمانی کا خصوصی پیغام بھی پڑھ کر سنایا گیا، جس میں انہوں نے فلسطینی قوم کو مخاطب کرتے ہوئے لکھا ہے کہ شہید جنرل قاسم سلیمانی نے اپنے سپوتوں کو "دشمن کی پہچان" اور "فلسطین و مسلمانوں کے قبلۂ اوّل کے ساتھ عشق" کا سبق سکھایا ہے، جبکہ قدس و فلسطین نہ صرف ہماری پوری زندگی کی تمام تفصیلات کے اندر حقیقی طور پر موجزن رہا ہے بلکہ وہ ہمارے خاندان کے ادب و آداب و عشق کا ایک مستقل حصہ بھی بن چکا ہے۔ زینب سلیمانی نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ ان کے والد نے اپنی تمام جہادی زندگی کے دوران فلسطین سے پوری طرح عشق کیا ہے، لکھا کہ ایران، فلسطین، لبنان، عراق، یمن اور شام سے تعلق رکھنے والے ممتاز شہداء کی تصاویر اب بھی ہمارے گھر میں آویزاں ہیں۔

فلسطین الیوم کے مطابق جنرل قاسم سلیمانی کی بیٹی نے اپنے پیغام میں لکھا کہ شہید احمد یسٰین، فتحی الشقاقی، عبدالعزیز الرنتیسی، ابو علی مصطفیٰ، ابو جہاد الوزیر، جہاد جبریل، عمر ابو شریعہ اور دوسرے بہت سے عظیم فلسطینی شہداء کہ جن کے ناموں کی لمبی فہرست یہاں بیان نہیں کی جا سکتی، وہ ممتاز شہداء ہیں، جن کے نام مستضعفین کے خورشید صفت امام اور مسئلۂ فلسطین کے اوّلین داعی روح اللہ الموسوی الخمینیؒ کے نام کے گرد ستاروں کے مانند جگمگا رہے ہیں۔ زینب سلیمانی نے اپنے پیغام میں تاکید کی کہ ان کے والد اور ان سے قبل امام خمینیؒ نے اپنے عقیدے کی بنیاد پر امتِ مسلمہ بالخصوص مستضعف اقوام اور مزاحمتی مجاہدین کو وعدہ دے رکھا ہے کہ فلسطین کی آزادی اور مستضعفین کی فتح نہ صرف ایک "کھلی حقیقت" بلکہ مکمل طور پر "حق" ہے۔

انہوں نے اپنے پیغام میں غزہ کے عوام کو مخاطب کرتے ہوئے لکھا کہ ان لوگوں پر خدا کی لعنت ہو، جنہوں نے تمہاری رصد کو کاٹ کر غاصب و مجرم صیہونیوں کے صفوں میں شرکت اختیار کر لی! خدا کی لعنت ہو عالمی ظلم کے سرغنہ "امریکہ" پر اور ان تمام ظالموں پر جو اس مجرم رژیم کی حمایت میں تلے ہوئے ہیں۔ جنرل قاسم سلیمانی کی بیٹی نے اپنے پیغام کے آخر میں تمام فلسطینی شہداء اور جنرل قاسم سلیمانی و ابو مہدی المہندس سمیت مزاحمتی محاذ کے تمام شہداء کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے ان کی بلندی درجات کے لئے دعا بھی کی۔
خبر کا کوڈ : 908013
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش