0
Thursday 7 Jan 2021 07:56

شہداء کی یاد میں جامعۃ المصطفیٰ واحد آشتیان کے زیراہتمام عظیم الشان سیمینار کا انعقاد

شہداء کی یاد میں جامعۃ المصطفیٰ واحد آشتیان کے زیراہتمام عظیم الشان سیمینار کا انعقاد
اسلام ٹائمز۔ شہید سردار قاسم سلیمانی و دیگر شہداء کی یاد میں جامعۃ المصطفیٰ واحد آشتیان طلاب اردو زبان کے زیر انتظام عظیم سیمینار کا انعقاد ہوا۔ جس میں تلاوت کے فرائض کو قاری جناب علی رضا مرادی نے انجام دیا اور نظامت کے فرائض کو شاعر اہلبیت جناب عرفان عابدی مانٹوی نے انجام دیا۔ اس کے بعد جناب امتیاز علی روحانی، جناب میر ہلال، جناب سید قمر کشمیری، جناب حسین اصغر، جناب رفیق انجم صاحبان نے تواشیح کے فرائض کو انجام دیا، جس سے بزم کی فضا خوشگوار ہوگئی۔ بعدہٗ جناب سید کامران زاہد نے انگریزی زبان میں، جناب عابد حسین متو نے عربی زبان میں مختصر تقریر کی اور جناب عباس افضل کے توسط سے ویڈیو پروجیکشن کے ذریعے قاسم سلیمانی کی حیات طیبہ پر روشنی ڈالی گئی۔

تہران سے تشریف لائے پروفیسر جناب راشد نقوی نے مجمع سے خطاب کیا۔ انہوں نے کہا کہ قاسم سلیمانی کو ایک فرد کی حیثیت سے نہ جانیں بلکہ ایک مکتب کی طرح سمجھیں اور جب آپ سب یہاں سے جائیں تو قاسم سلیمانی کے افکار و کردار کو بھی ساتھ لے جائیں۔ زندہ قاسم سلیمانی نے داعش اور اسکے حواریوں کو شکست دی اور شھید قاسم سلیمانی داعش اور اسکے آقاوں امریکہ، اسرائیل اور آل سعود کو نابود کر دے گا۔ ڈاکٹر راشد نقوی سانحہ کوئٹہ پر شھداء کے اہل خانہ سے دلی تعزیت کرتے ہوئے حکومت کی بےحسی پر کڑی تنقید کی۔ انہوں نے پاکستان میں شیعہ مسلمانوں کے خلاف سرگرم عناصر اور داعش کو ایک مائنڈ سیٹ قرار دیا۔ اس کے بعد جناب عباس افضل نے منظوم نذرانہ عقیدت پیش کیا۔

بعدازاں قم سے تشریف لائے ہوئے حجت الاسلام والمسلمين عالی جناب مولانا اشرف تابانی نے بہترین انداز میں مجلس سے خطاب کیا۔ مولانا موصوف نے قاسم سلیمانی کی چند صفات پر روشنی ڈالی نیز مالک اشتر کی صفات کے آئینہ میں قاسم سلیمانی کی صفات کو اجاگر کیا اور کہا کہ جب قاسم سلیمانی کی شہادت ہوئی تو ان کے جسم کے ٹکڑے ٹکڑے ہوگئے مگر وہ ہاتھ جس میں انگشتری تھی، وہ باقی رہا، جو اشارہ ہے اس بات کی طرف کہ جس طرح عباس کے ہاتھ کٹے، مگر پرچم حسین کو جھکنے نہ دیا، اسی طرح قاسم سلیمانی کا ہاتھ کٹا مگر پرچم انقلاب کو جھکنے نہ دیا۔ پھر مولانا موصوف نے مصائب آل محمد سے مجمع کو سوگوار کیا۔
خبر کا کوڈ : 908637
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش