0
Sunday 5 Dec 2021 22:33

حکومت سے ہونے والا اتحاد کب تک چلتا ہے کچھ نہیں کہا جا سکتا، ایم کیو ایم

حکومت سے ہونے والا اتحاد کب تک چلتا ہے کچھ نہیں کہا جا سکتا، ایم کیو ایم
اسلام ٹائمز۔ متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے رہنما عامر خان نے کہا ہے کہ حکومت سے ہونے والا اتحاد کب تک چلتا ہے، اس بارے میں کچھ نہیں کہا جا سکتا، سندھ کے نئے بلدیاتی قانون سے متعلق تجاویز پیش کیں تھیں، مگر ہماری بات نہیں سُنی گئی۔ تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ فنکشنل کی قیادت سے ملاقات کے بعد پگارا ہاؤس کراچی کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عامر خان نے بتایا کہ نئے بلدیاتی ترمیمی ایکٹ کے خلاف گیارہ دسمبر کو آل پارٹیز کانفرنس کا انعقاد کرنے جا رہے ہیں۔ انہوں نے  کہا کہ پیپلز پارٹی نے اس بل کی آڑ لے کر پورے صوبے کے بلدیاتی اختیارات پر ڈاکہ ڈالا، سندھ کی تباہی کے پیچھے کوئی اور نہیں، بلکہ پیپلز پارٹی ہے، نیا بلدیاتی بل سندھ کے ساتھ زیادتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی جعلی اکثریت کے ساتھ صوبے میں حکمرانی کر رہی ہے، اندرون سندھ کے اسپتالوں میں کتے کاٹنے کی دوائی موجود نہیں، جبکہ پورے صوبے میں امن و امان کی صورت حال خراب ہے۔

عامر خان نے دعویٰ کیا کہ ایم کیو ایم پاکستان نے بلدیاتی ترمیمی بل سے متعلق تجاویز صوبائی وزیر سعید غنی کو پیش کی تھی، مگر ہماری بات نہیں مانی گئی، یہ آمرانہ سوچ ہے جس کے ہم خلاف ہیں، کیا سعید غنی بل پاس کرانے کے بعد بات کریں گے۔؟ انہوں نے یہ بھی کہا کہ تحریک انصاف سے ہمارے شکوے ہیں، کیونکہ ہماری ناامیدی کی انتہا ہوتی جا رہی ہے، حکومت سے ہونے والا اتحاد کب تک چلتا ہے، اس بارے میں کچھ نہیں کہا جا سکتا۔ واضح رہے کہ ایم کیو ایم پاکستان نے سندھ حکومت کی جانب سے اسمبلی سے منظور کیے جانے والے بلدیاتی ترمیمی بل کے خلاف تمام جماعتوں کو میدان میں لانے کا فیصلہ کرلیا اور پی پی پر دباؤ ڈالنے کیلئے اے پی سی کے انعقاد کا اعلان بھی کیا ہے۔ اس حوالے سے ایم کیو ایم کے وفود نے اتوار کو مسلم لیگ (ن)، پاکستان تحریک انصاف، مہاجر اتحاد تحریک، مسلم لیگ فنکشنل کے مراکز کا دورہ کیا اور قائدین سے ملاقات کرکے انہیں کانفرنس میں شرکت کی دعوت دی۔
خبر کا کوڈ : 967043
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش