0
Saturday 8 Jan 2022 20:16

وفاقی حکومت کی نااہلی برقرار رہی تو ملک میں خوراک کی شدید قلت ہوسکتی ہے، منظور وسان

وفاقی حکومت کی نااہلی برقرار رہی تو ملک میں خوراک کی شدید قلت ہوسکتی ہے، منظور وسان
اسلام ٹائمز۔ مشیر زراعت سندھ منظور حسین وسان نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت کی نااہلی برقرار رہی تو ملک میں خوراک کی شدید قلت ہوسکتی ہے، تاریخ میں پہلی مرتبہ وفاقی وزیر حماد اظہر نے یوریا کھاد کا اپنا کوٹہ متعارف کروایا، کوٹہ سے لاکھوں یوریا کھاد کی بوریاں من پسند اے ٹی ایمز کو دی گئیں۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ گندم، چینی اور گیس بحران کے بعد حسب روایت یہ الزام بھی سندھ حکومت پر ڈالنے کی کوشش کی گئی، سندھ پر یوریا کھاد سندھ سے افغانستان اسمگلنگ ہونے کے الزام کو رد کرتے ہیں۔ منظور وسان نے کہا کہ سندھ کو این ایف سی کی طرح یوریا بیگیجز میں بھی حصہ نہیں دیا گیا، عقل کے اندھوں کو کوئی سمجھائے کہ سندھ کی سرحدیں افغانستان سے نہیں ملتی۔ منظور وسان نے کہا کہ یوریا کھاد بلوچستان اور خیبرپختونخواہ کے راستے سے افغانستان اسمگلنگ ہورہی ہے، وفاق اپنی نااہلی نہ چھپائے، الزام تراشیوں کے چیمپئن صرف لفاظی کرتے ہیں، یوریا کھاد اسمگلنگ میں اور کوئی نہیں بلکہ عمران حکومت ملوث ہے ان کے آشیرباد سے یوریا باہر جارہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ فرٹیلائزر کمپنیاں منسٹری آف انڈسٹری کے ماتحت ہیں، سندھ کو تو یوریا کھاد کا ڈیٹا بھی فراہم نہیں کیا جارہا، سندھ میں اسمگلنگ روکنے کے لئے بارڈرز پر چیک پوسٹیں قائم کردی ہیں، مگر وفاق ساتھ نہیں دے رہا، بارشیں ہونے سے گندم کی فصل تباہ ہونے سے بچ گئی، سندھ نے 19 لاکھ ہیکٹرز پر گندم کی کاشت کا ٹارگٹ پورا کیا ہے۔ منظور وسان نے کہا کہ یوریا کھاد پر کسانوں کو 400 ارب روپے سبسڈی دینے والے وفاقی دعوے کوبھی رد کرتے ہیں۔ منظور وسان نے کہا کہ ملک کے کسانوں کو جب یوریا کھاد مل ہی نہی رہی تو پھر وفاق 400 سو ارب روپے کی سبسڈی کیسے دے رہا ہے، کسانوں کو گندم کے لئے وقت پر یوریا کھاد نہ ملی تو گندم کا بڑا بحران پیدا ہوسکتا ہے، اگر ملک میں یوریا کھاد کی کوئی کمی نہیں ہے تو پھر باہر سے درآمد کیوں کی جارہی ہے؟۔

منظور وسان نے کہا کہ اگر ملک میں یومیہ 25 ہزار ٹن یوریا کھاد پاکستان میں بن رہی ہے تو پھر کسانوں مل کیوں نہیں رہی؟، حماد اظہر کے کہنے پر سندھ کو لاکھوں یوریا کھاد بوریاں کم دی گئی اور پنجاب کی کوٹا بڑھا دیا دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت کہہ رہی ہے کہ یوریا کھاد کا کافی اسٹاک موجود ہے، بتایا جائے وہ اسٹاک کہاں گیا کسانوں کو کیوں نہیں مل رہا، ملک میں اس وقت یوریا کھاد کا بحران ہے جس کی وجہ سے کسان شدید پریشان ہیں اور فصلوں کو نقصان ہونے کا خدشہ ہے۔ منظور وسان نے کہا کہ جب سے عمران حکومت آئی ہے لوگوں کو لائنوں میں ذلیل و خوار کیا جارہا ہے، کبھی آٹے کیلئے لائنیں، کبھی پیٹرول کیلئے لائنیں، کبھی چینی کیلئے لائنیں اور اب کھاد لینے کیلئے لائنیں۔
خبر کا کوڈ : 972568
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

ہماری پیشکش